حکومت کا سوشل میڈیا پر منافرت پھیلانے والوں کے خلاف کریک ڈاؤن کا اعلان

حکومت کا سوشل میڈیا پر منافرت پھیلانے والوں کے خلاف کریک ڈاؤن کا اعلان

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر ،این این آئی)وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات چوہدری فواد حسین نے سوشل میڈیا پر منافرت پھیلانے والوں کے خلاف آئندہ ہفتے سے بڑے کریک ڈاؤن کا اعلان کرتے ہوئے واضح کیا ہے کہ کسی کو نفرت پھیلانے نہیں دینگے ، ڈیجیٹل میڈیا رسمی میڈیا پر حاوی ہو رہا ہے، سوشل میڈیا پر نفرت انگیز مواد کو کنٹرول کیاجائیگا، پاکستان انتہا پسندی اور دہشت گردی کے دور سے کامیابی سے نکلا ہے، ملک میں اظہار رائے کی آزادی کے نام پر دوسروں کی آزادی سلب نہیں کی جا سکتی۔ بدھ کو یہاں پارلیمنٹرینز کو انتہاء پسندی کے معاملات پر ابلاغ عامہ سے موثر تعلقات کے موضوع پر ورکشاپ سے خطاب کرتے ہوئے وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے کہا کہ کسی کو نفرت نہیں پھیلانے دیں گے، سوشل میڈیا پر فتوے اور دھمکیاں دینے پر بعض افراد کو گرفتار کیا گیا ہے، آئندہ ہفتے سے سوشل میڈیا پر منافرت پھیلانے والوں کے خلاف بڑا کریک ڈاؤن کریں گے۔انہوں نے کہا کہ نفرت انگیز باتوں کو عام میڈیا پر بہت حد تک کنٹرول کرلیا ہے، ایساطریقہ بنا لیا ہے جس سے سوشل میڈیا پر بھی نفرت انگیز تقاریر روک پائیں گے۔فواد چوہدری نے کہا کہ پی ٹی آئی کی حکومت آنے سے ہم منظم طریقے سے بڑھے ہیں، ڈائیلاگ بنیادی شرط ہے اور جو ڈبیٹ کرتا ہے اس کے خلاف فتوے دیے جاتے ہیں، کسی کو حق نہیں کہ دوسروں کی آزادی سلب کرے۔وزیراطلاعات نے کہا کہ دنیا کو انتہا پسندی جیسے سنگین چیلنج کا سامنا ہے۔انہوں نے کہاکہ دنیا کے مختلف معاشرے کسی نہ کسی صورت میں انتہا پسندی کا شکار ہیں۔وزیر اطلاعات نے کہاکہ بھارت میں مودی حکومت آنے کے بعد انتہا پسندی میں اضافہ ہوا۔ چوہدری فواد حسین نے کہاکہ پاکستان کو بھی دہشتگردی اور انتہاپسندی کا سامنا ہے۔افغان تنازع میں پھنسنے سے پاکستان میں انتہا پسندی پھیلی۔ وزیرا طلاعات نے کہا کہ کسی پر اپنی رائے مسلط کرنے سے مسائل جنم لیتے ہیں۔ سوشل میڈیا پر نفرت انگیز مواد روکنے کیلئے اقدامات کر رہے ہیں،سوشل میڈیا کا غلط استعمال کرنیوالوں کی گرفتاریاں کی گئی ہیں۔چوہدری فواد حسین نے کہاکہ عمران خان کی حکومت میں پہلے روز سے ہی قانون کی عملداری کا عزم کیا۔ دریں اثنا وفاقی وزیراطلاعات چوہدری فواد حسین نے کہا ہے کہ مشاہد اللہ جیسے لوگ کمیٹیوں کے سربراہ ہوں تو اس سے عزت نہیں ہوتی۔ سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے ایک پیغام میں وزیراطلاعات نے پی آئی اے میں جعلی ڈگریوں سے متعلق کہا کہ بات کریں توپھر کہتے ہیں پارلیمان کی توقیر متاثر ہو گئی، جب مشاہداللہ جیسے لوگ کمیٹیوں کے سربراہ ہوں اور مطالبہ ہو کہ جعلی ڈگریوں والے پائلٹس کو جہاز اڑانے کی اجازت دی جائے تو اس سے عزت بڑہ نہیں سکتی، پاکستان نے دس سالوں میں جو زوال دیکھا ہے اس کی وجہ یہی رویے ہیں۔

مزید : کراچی صفحہ اول


loading...