مندر کے نام پر سر کاری سر پرستی میں قبضے قبول نہیں ، سیف الدین

مندر کے نام پر سر کاری سر پرستی میں قبضے قبول نہیں ، سیف الدین

کراچی (اسٹاف رپورٹر)جماعت اسلامی کراچی پبلک ایڈ کمیٹی کے صدر و عبوری امیر ضلع قائد ین سیف الدین ایڈوکیٹ اور سٹی کونسل میں جماعت اسلامی کے پارلیمانی لیڈر جنید مکاتی نے اپنے ایک مشترکہ بیان میں نے کہا کہ سولجر بازار میں واقع مندر کے نام پر آس پاس کی لیز شدہ زمینوں پر ڈپٹی کمشنر آفس اور کے ایم سی کے اسٹاف کی مدد سے قبضے کیے جا رہے ہیں ۔جو کسی صورت میں بھی قبول نہیں ۔ سندھ حکومت فوری طور پر اس صورتحال کا نوٹس لے اور علاقے کے عوام کے اندر پھیلی بے چینی اور اضطراب کو دور کرے ۔ انہو ں نے کہا کہ تقریباً 500گز جگہ مندر کے نام پر نقشہ میں موجود ہے جس کے احاطہ میں ایک جانب مندر بنا ہوا ہے یہ مندر اس آبادی میں ہے جہاں صرف چند ہندو خاندان آباد ہیں لیکن گزشتہ چند روز سے اچانک ڈپٹی کمشنر ایسٹ کے دفتر کے کچھ افراد یہاں آکر پولیس کی مدد سے آس پاس کے علاقے میں قیام پاکستان کے وقت سے رہائش پذیر مکینوں اور جائیداد کے مالکان کو دھمکا رہے ہیں اور جگہ خالی کر نے کو کہہ رہے ہیں۔ اس دوران نہ صرف ان افرادنے چند پلاٹس کو قبضہ کر کے مندر کے رکھوالے کے حوالے کر دیا ہے بلکہ دیگر گھروں پر بھی نشانات لگا کر خوف و ہراس پھیلا رہے ہیں ۔ اس سے قبل بھی کچھ افراد نے کے ایم سی کے ملازمین سے مل کر شر انگیزی کی کوشش کی تھی جس کے خلاف علاقہ مکینوں نے عدالت سے رجوع کیا اور بہت سے کیسوں میں ان کے حق میں فیصلہ بھی ہو گیا لیکن ڈی سی آفس کے افراد کچھ سننے کو تیار نہیں اور اوپر کے حکم کے نام پر مسلسل جگہ خالی کر نے کی دھمکیاں دے رہے ہیں ۔ جماعت اسلامی کے رہنماؤں نے کہا کہ قانونی جدو جہد میں ہم علاقہ مکینوں کے ساتھ ہیں اور ان کی ہر ممکن مدد کریں گے۔ اگر سر کاری کارندوں نے اپنی ریشہ دوانیاں جاری رکھیں توہم علاقہ مکینوں کے ہمراہ بھر پور احتجاج بھی کریں گے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ پاکستانی مسلمان اقلیتی شہریوں کے ساتھ انتہائی اچھے اور خوشگوار ماحول میں رہ رہے ہیں اور اقلیتوں کو پورے حقوق بھی حاصل ہیں لیکن اگر کوئی اس کا فائدہ اُٹھا کر زیادتی اور نا انصافی کی کوشش کرے گا تو حالات کی ذمہ داری بھی اس ہی پر عائد ہو گی ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر


loading...