اب اسمارٹ فونز بھی بیماریوں کی تشخیص کریں گے

اب اسمارٹ فونز بھی بیماریوں کی تشخیص کریں گے

لندن (مانیٹر نگ ڈیسک)موبائل فون جب سے اسمارٹ ہوا ہے اس نے بہت سے دوسرے آلات کی جگہ لے لی ہے جیسے کیمرا ، گھڑی، ٹیپ ریکارڈر وغیرہ۔ اس کی ایپلیکیشنز کی بدولت آپ فیشن ڈیزائنگ سے لے کر کتاب لکھنے تک کسی بھی معاملے میں مدد لے سکتے ہیں، یہاں تک کہ مدد کا یہ سلسلہ ذاتی تصویر سے لے کے ذاتی تشخیص تک جا پہنچا ہے۔سائنسدانوں نے عکس بندی کے لیے ایک نیا الوگرتھم تیار کر لیا ہے جو اسمارٹ فونز کو بیماریوں کی تشخیص کے قابل بناتا ہے۔ الوگرتھم یعنی حساب و شمار کا عمل یا قاعدہ، یہ الوگرتھم ایپلی کیشن کی شکل میں ہو گا۔نیا الوگرتھم اسمارٹ فونز کو بیماریوں کی تشخیص اسپکیٹرواسکوپی کے ذریعے جانچنے کے قابل بناتا ہے۔ طبی تحقیق میں استعمال ہونے والی 'اسپیکٹرواسکوپی' بہت ہی حساس اور طاقتور ڈیوائس ہے۔ محققین 10000 سے زائد تصویروں کی جانچ کے بعد نئے الوگرتھم کو سامنے لا سکے ہیں۔اسمارٹ فون کے کیمروں میں ظاہری حالت کو سامنے لانے کی زیادہ صلاحیت ہوتی ہے لیکن ان سے پیمائش کا کام نہیں لیا جا سکتا۔

اسمارٹ فونز

مزید : کراچی صفحہ اول


loading...