سندھ میں تنخواہوں میں اضافے کا نوٹیفکیشن جاری نہ ہونے پر ینگ ڈاکٹرز کا بائیکاٹ

سندھ میں تنخواہوں میں اضافے کا نوٹیفکیشن جاری نہ ہونے پر ینگ ڈاکٹرز کا ...

کراچی(آئی این پی ) سندھ کے سرکاری اسپتالوں میں ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن نے تنخواہوں میں اضافے کا نوٹیفکیشن جاری نہ کیے جانے کے خلاف تمام اوپی ڈیز کا بائیکاٹ کردیا، جناح، سول، این آئی سی ایچ، این آئی سی وی ڈی اور دیگر اسپتالوں میں مریضوں کو مشکلات کا سامنا ہے۔ بدھ کو سندھ کے سرکاری ہسپتالوں میں ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن نے تنخواہوں میں اضافے کا نوٹیفکیشن جاری نہ کیے جانے کے خلاف تمام اوپی ڈیز کا بائیکاٹ کردیا،ینگ ڈاکٹرز نے کہا ہے کہ سندھ حکومت نے تنخواہ اور دیگر مراعات پنجاب اور خیبرپختونخوا کے برابر کرنے کی یقین دہانی کروائی تھی، لیکن اس کا نوٹیفیکشن جاری نہیں کیا گیا۔ینگ ڈاکٹرز کی جانب سے او پی ڈیز کے بائیکاٹ کے باعث اسپتالوں میں مریضوں کو مشکلات کا سامنا ہے۔احتجاجی ڈاکٹرز کے مطابق انہوں نے حکومتی یقین دہانی پر ہڑتال ختم کرکے مہلت دی لیکن کچھ نہیں ہوا، لہذا تمام او پی ڈیز کے ساتھ ساتھ او ٹیز بھی بند رہیں گے۔ترجمان محکمہ صحت کے مطابق مختلف گریڈز میں اضافہ 25 ہزار سے 75 ہزار تک کیا گیا ہے جس کے تحت گریڈ 17 اور 18کے ڈاکٹرز 60 ہزار تک الاؤنس لے سکیں گے جب کہ گریڈ 19 اور 20 کے ڈاکٹرز 90 ہزار روپے تک الاؤنس لے سکیں گے۔مطالبات کی منظوری کے بعد صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر عذرا پیچوہو نے ڈاکٹروں سے مریضوں کی تکالیف کو مدنظر رکھتے ہوئے ہڑتال ختم کرنے کی اپیل کی تھی، جس پر ینگ ڈاکٹرز نے احتجاج ختم کردیا تھا۔

ینگ ڈاکٹرز

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر