”اس کیس میں توٹرائل کورٹ نے کمال ہی کر دیا اور ۔۔۔“ چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ کے دیت کی ادائیگی سے متعلق کیس کی سماعت کے دوران ریمارکس

”اس کیس میں توٹرائل کورٹ نے کمال ہی کر دیا اور ۔۔۔“ چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ ...
”اس کیس میں توٹرائل کورٹ نے کمال ہی کر دیا اور ۔۔۔“ چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ کے دیت کی ادائیگی سے متعلق کیس کی سماعت کے دوران ریمارکس

  


اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ نے پیسکو کیخلاف دیت کی ادائیگی سے متعلق اپیل واپس لینے کی بنیاد پر نمٹا دی ہے اور ریمارکس جاری کرتے ہوئے کہا کہ بہتر ہو گا کہ کمپنی کیخلاف معاضے کیلئے سول کیس دائر کریں۔

چیف جسٹس آسف سعید کھوسہ کی سربراہی میں پیسکو کمپنی کیخلاف دیت کی ادائیگی سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی جس دوران چیف جسٹس نے ریمارکس جاری کرتے ہوئے کہا کہ اس کیس میں تو ٹرائل کورٹ نے کمال کر دیا ، ایبٹ آباد میں شادی کی تقریب میں کرنٹ لگنے سے بچہ جاں بحق ہوا ، ورثاءنے واپڈا حکام کیخلاف مقدمہ درج کروا دیا ، ٹرائل کورٹ نے تمام ملزمان کو بری کرتے ہوئے کمپنی کو سز ا سنا دی ۔

چیف جسٹس کا کہناتھا کہ سپریم کورٹ نے کمپنی کیخلاف اپیل سماعت کیلئے منظور کر لی اور بری ہونے والے ملزمان کے وارنٹ بھی جاری کر دیئے ۔پیسکو تو ملزموں کی فہرست میں موجود ہی نہیں ، کسی کو سنے بغیر اس کیخلاف کوئی حکم جاری نہیں ہو سکتا ، دیت کی ادائیگی کا حکم اس کو کیسے دیں جس کیخلاف کیس ہی نہیں ۔

چیف جسٹس نے ریمارکس جاری کرتے ہوئے کہا کہ کیا کمپنی کو جیل بھیجا جا سکتاہے ؟ کمپنی کو جیل بھجوا دیں تو رکھیں گے کہاں ، کیا کبھی فوجداری کیس میں کسی کمپنی کو سزا ہوئی ہے ، بہتر ہو گا کہ کمپنی کیخلاف معاضے کیلئے سول کیس دائر کریں ۔ سپریم کورٹ نے پیسکو کیخلاف اپیل واپس لینے کی بیناد پر نمٹا دی ۔

مزید : قومی