وزیر اعظم کو طالبان وفد کے ساتھ یہ کام نہیں کرنا چاہئے ، سلیم صافی نے حکومت کو ممکنہ بگاڑ سے آگاہ کردیا

وزیر اعظم کو طالبان وفد کے ساتھ یہ کام نہیں کرنا چاہئے ، سلیم صافی نے حکومت کو ...
وزیر اعظم کو طالبان وفد کے ساتھ یہ کام نہیں کرنا چاہئے ، سلیم صافی نے حکومت کو ممکنہ بگاڑ سے آگاہ کردیا

  


اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) تجزیہ کار سلیم صافی نے کہاہے کہ ا س وقت ہم کو طالبان امریکہ مذاکرات اسلام آباد میں نہیں لانے چاہئے اور نہ وزیراعظم کو طالبان وفد سے ملنا چاہئے ، کیونکہ اس طرح افغان حکومت برہم ہوگی اور انڈیاکی طرف جائیگی ۔

دنیا نیوز کے پروگرام ”نقطہ نظر “ میں گفتگو کرتے ہوئے سلیم صافی نے کہا کہ افغان امن مذاکرات کے حوالے سے پاکستان کوبہت زیادہ محتاط رہناچاہئے ، افغان حکومت جیسی بھی ہے لیکن اگر افغان حکومت مذاکرات کو سبوتاژ کرنے پر آجائے تو مشکلات پیدا کر سکتی ہے ۔

انہوں نے کہا کہ ہم کو اس امن عمل کا کریڈٹ نہیں لیناچاہئے ، اس وقت ہم کو طالبان امریکہ مذاکرات اسلام آباد میں نہیں لانے چاہئے اور نہ وزیراعظم کو طالبان وفد سے ملنا چاہئے ، کیونکہ اس طرح افغان حکومت برہم ہوگی اور انڈیاکی طرف جائیگی ۔ ان کا کہناتھا کہ اسلام آباد میں امن مذاکرات پاکستان کی خواہش پر نہیں ہورہے بلکہ یہ امریکہ کروا رہاہے ، امریکی چاہتے ہیں قطر میں مذاکرات ہونے سے قبل طالبان کے ساتھ ایک سیشن اسلام آباد میں بھی کرلیا جائے ۔

مزید : قومی