محکمہ صحت میں کرپشن‘ تحقیقات کا دائرہ وسیع‘ 17فروری کو پیشی

محکمہ صحت میں کرپشن‘ تحقیقات کا دائرہ وسیع‘ 17فروری کو پیشی

  



ملتان (وقا ئع نگار) محکمہ صحت ملتان میں کرپشن۔مالی و انتظامی امور میں بے قاعدگیوں سمیت دیگر شکایت کا معاملہ۔ اینٹی کرپشن نے تحقیقات کا دائرہ کار (بقیہ نمبر33صفحہ12پر)

وسیع کرتے ہوئے لاکھوں روپے کی انسولین چوری کی تفتیش کو بھی مذکورہ انکوائری کے ساتھ یکجا کردیا ہے جسکی آئندہ پیشی 17 فروری مقرر کی گئی ہے۔جبکہ انکوائری میں الزامات کا سامنا کرنے والے محکمہ صحت کے اعلی افسر۔اکاوٹینٹ انجم نذیر۔اشفاق سٹور کیپر سمیت دیگر ملازمین تاحال انکوائری میں شامل نہ ہونے کے تاخیری حربے استعمال کر رہے ہیں۔جسکی وجہ سے مذکورہ الزامات پر مبنی درخواست کے نتائج حتمی مراحل میں داخل نہیں ہورہے ہیں۔واضح رہے ملتان کے رہائشی شہری شریف انصاری نے محکمہ صحت ملتان میں کرپشن۔مالی امور میں بے قاعدگیوں سمیت دیگر سنگین نوعیت کے الزامات کے تحت انکوائری کیلئے ڈائریکٹر جنرل اینٹی کرپشن پنجاب کو درخواست دی تھی۔جہنوں نے درخواست میں لگائے گئے الزامات کی ریگولر چھان بین کیلئے ڈائریکٹر اینٹی کرپشن ملتان ریجن سرفراز مگسی کو انکوائری جلد از جلد میرٹ پر یکسو کرنے ہدایت کی گئی۔ڈائریکٹر اینٹی کرپشن ملتان نے انکوائری ملتے ہی ڈپٹی ڈائریکٹر اینٹی کرپشن عبدالروف بھٹی کو مذکورہ معاملے کی انکوائری کرنے کا کہا۔اس کے ساتھ ہی ڈائریکٹر سرفراز مگسی نے محکمہ صحت میں لاکھوں روپے کی انسولین چوری ہونے کی انکوائری کو بھی دیگر شکایت پر مبنی انکوائری کے ساتھ یکجا کر دیا گیا ہے۔دونوں انکوائری کی آئندہ تاریخ 17 فروری مقرر کی گئی ہے۔اینٹی کرپشن ذرائع کے مطابق اینٹی کرپشن ملتان میں جاری انکوائریز میں الزام علیہان تاحال انکوائری افسر کے سامنے پیش نہیں ہوئے ہیں۔اور صوبائی اعلی شخصیات کی شفارشں کروانے پر زور دیا ہوا ہے۔

تحقیقات

مزید : ملتان صفحہ آخر