وزیراعلیٰ وارکان پنجاب اسمبلی کی تنخواہیں بڑھانے کے مجوزہ ترمیمی قانون کی منظوری کیلئے دائر درخواست مسترد

وزیراعلیٰ وارکان پنجاب اسمبلی کی تنخواہیں بڑھانے کے مجوزہ ترمیمی قانون کی ...

  



لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ کی جسٹس عائشہ اے ملک نے وزیراعلیٰ عثمان بزدار سمیت ارکان پنجاب اسمبلی کی تنخواہیں بڑھانے کے مجوزہ ترمیمی قانون کی منظوری کیلئے دائر درخواست پر ہائی کورٹ رجسٹرار آفس کا اعتراض برقرار رکھتے ہوئے درخواست مسترد کر دی،فاضل جج نے قراردیا کہ آئین کے تحت وزیراعظم پاکستان اور وزیر اعلیٰ کو درخوا ست میں فریق نہیں بنایا جاسکتا، نامدار علی ساہو ایڈووکیٹ نے اپنی درخواست میں موقف اختیار کیاتھا کہ صوبائی اسمبلی نے 12 مارچ 2019ء کو ارکان اسمبلی کی تنخواہیں بڑھانے کے بل کی منظوری دی،وزیراعظم عمران خان نے گورنر پنجاب کو ترمیمی پر دستخط نہ کرنے کا حکم دیا،وزیراعظم کو صوبے کی قانون سازی کے معاملات میں مداخلت کا کوئی اختیار نہیں، رجسٹرار آفس نے اعتراض لگایاتھا کہ درخواست میں وزیراعظم اور وزیراعلیٰ کو براہ راست فریق بنایا گیاہے جو آئین کے منافی ہے،فاضل جج نے بطور اعتراض کیس درخوا ست کی سماعت کرتے ہوئے رجسٹرارآفس کااعتراض برقراررکھا اور درخواست خارج کردی۔

درخواست مسترد

مزید : صفحہ آخر