بجلی کی تقسیم کار کمپنیاں لائن سٹاف کی جانوں کے تحفظ کو یقینی بنانے میں ناکام ہو گئی

بجلی کی تقسیم کار کمپنیاں لائن سٹاف کی جانوں کے تحفظ کو یقینی بنانے میں ...

  



ملتان (نیوز رپورٹر)وزارت توانائی (پاور ڈویڑن) پاکستان الیکٹر پاور کمپنی(پیپکو)اور بجلی کی تقسیم کار کمپنیاں لائن سٹاف (بقیہ نمبر40صفحہ7پر)

کی جانوں کے تحفظ کو یقینی بنانے میں ناکام ہو گئی۔مربوط اور موثر پالیسی نہ بنائی جا سکی۔سات سالوں میں 1180 ہلاکتوں کے باوجود مہلک حادثات کے خاتمے،کمی اور روک تھام کے لئے اقدامات نہیں کئے جا سکے۔بجلی کمپنیاں اور سی بی اے یونین سیفٹی ڈے مناتے اور سیفٹی سیمینار ز کے انعقدا تک محدود ہو کرہ گئے ہیں۔پاکستان الیکٹر ک پاور کمپنی (پیپکو) میں قائم سنٹرل سیفٹی ڈائریکٹوریٹ کی انجینء بیوروکریسی دوروں اور لیکچرز تک محدود ہے جبکہ یہی صورتحال بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں میں قائم سیفٹی ڈائریکٹوریٹس کی ہے جہاں کسی مہلک حادثے میں لائن مین کی شہادت پر ا?ئندہ چند روز تک سیفٹی ڈے اور سی?تی سینیمار ز کا انعقاد ہوتا ہے اور ان کے نام پر سرکل کے تمام دفاتر کے ملازمین سمینارز میں شرکت کے نام پر غائب رہتے ہیں۔میپکو ترجمان کے مطابق گزشتہ سالوں کے مقابلے میں مالی سال 2019-20ء میں مہلک اور غیر مہلک حادثات میں نمایا ں کمی ا?ئی ہے اور حادثات کو زیر سطح پر لانے کے لئے اقدامات کئے جا رہے ہیں۔

لائن سٹا ف

مزید : ملتان صفحہ آخر