حکومتی پیکج سے قبل یوٹیلیٹی سٹور ز سے دالیں، بیسن، چنے غائب، شہریوں کی آمد بھی رک گئی

      حکومتی پیکج سے قبل یوٹیلیٹی سٹور ز سے دالیں، بیسن، چنے غائب، شہریوں کی ...

  



لاہور(لیڈی رپورٹر)صوبائی دارالحکومت کے یوٹیلیٹی سٹورز پر تاحال اشیائے ضروریہ کی عدم دستیابی کی صورتحال قائم ہے اور یوٹیلیٹی سٹورز پر دال ماش، دال مسور، دال مونگ، بیسن اور کالے چنے نایاب ہوگئے ہیں جس کی وجہ سے آنے والے شہریو ں کو شدیدپر یشا نی کا سا منا ہے۔ زیادہ تر سٹورز پر چینی کی بھی پا نچ کلو کی پیکنگ مو جود ہے جبکہ زیادہ ترافراد2 کلو کی پیکنگ کا مطا لبہ کر رہے ہیں۔ شہریو ں نے کہا ہے کہ حکومت کا ریلیف پیکیج عوام سے مذاق ہے، ایک چھت تلے تما م چیزوں کی فرا ہمی ہو نی چا ہیے تا کہ شہری ایک جگہ سے ہی تما م خریدا ری کر سکیں،ایک دو روپے کے فرق کے لئے عوام اب یو ٹیلیٹی سٹورز پر نہیں آتے۔ روزنامہ پاکستان کے سروے کے دوران شہریو ں عا رف، ندیم، شہریا ر نے کہا ہے کہ ریلیف پیکیج کے نام پر عوام سے مذاق کیا جا رہا ہے ایک چھت کے تلے تما م چیزوں کی فرا ہمی ہو نی چا ہیے تا کہ شہری ایک جگہ سے ہی تما م خریدا ری کر سکیں۔اس حوالے سے یوٹیلیٹی سٹورانتظا میہ کے مطابق حکومت سے گزشتہ ڈیڑھ سال سے سبسڈی کی رقم کا مطالبہ کر رہے ہیں سابق حکومت کی جانب سے پانچ سال یوٹیلیٹی سٹورز پر سبسڈی تو دی جاتی رہی لیکن سبسڈی کی رقم فراہم نہ کی گئی جس سے یوٹیلیٹی سٹورز مالی بحران کا شکار ہوگیا تاہم اب موجودہ حکومت نے 25 ارب کی خطیر رقم میں سے 1 ارب گزشتہ رمضان المبارک اور 6 ارب روپے گزشتہ ماہ جاری کئے، جبکہ 15ارب روپے کا مزید ریلیف پیکیج فراہم کرنے کا فیصلہ کیا ہے جس سے یقینی طو ر پر یو ٹیلیٹی سٹورز پر گا ہکو ں کی آمدورفت بڑھے گی۔

دالیں غائب

مزید : صفحہ اول