خیبرپختوںخوا میں 5 سال کے دوران 25 بچے زیادتی کے بعد قتل لیکن کتنے ملزمان کو سزا ہوسکی؟ جان کر آپ کو بھی دکھ ہوگا

خیبرپختوںخوا میں 5 سال کے دوران 25 بچے زیادتی کے بعد قتل لیکن کتنے ملزمان کو ...
خیبرپختوںخوا میں 5 سال کے دوران 25 بچے زیادتی کے بعد قتل لیکن کتنے ملزمان کو سزا ہوسکی؟ جان کر آپ کو بھی دکھ ہوگا

  



پشاور(ویب ڈیسک)  خیبر پختونخوا میں گزشتہ پانچ برسوں کے دوران 25 بچوں کو زیادتی کے بعد قتل کرنے کا انکشاف ہوا ہے جبکہ ان مقدمات میں 80 فیصد ملزمان ناقص تفتیش کے باعث رہا ہوگئے۔

سینٹرل پولیس آفس سے حاصل کردہ ڈیٹا کے مطابق سال 2015 میں بچوں کو زیادتی کے بعد قتل کے دو کیسزکا تاحال سراغ نہیں لگایا جاسکا ہے۔ ایڈیشنل آئی جی انویسٹی گیشن خیبر پختونخوا فیروز شاہ نے بتایا کہ گذشتہ پانچ برسوں میں بچوں کیساتھ زیادتی کے کیسز میں تین گنا اضافہ ہواہے۔

ایکسپریس کے مطابق ان کا کہنا تھا کہ بچوں کیساتھ زیادتی کے واقعات پہلے بھی پیش آتے تھے تاہم انکی رپورٹنگ کم تھی اب اس میں اضافہ ہورہا ہے جس کی وجہ سے تاثر ملتا ہے کہ یہ واقعات بھی بڑھ رہے ہیں۔

بچوں کیساتھ زیادتی اور قتل کرنے والے ملزمان کی رہائی کی بنیادی وجہ ان کیسز میں تحقیقات کی کمی ، اور فرانزک شواہد اکٹھا کرنے کے لئے سٹاف کو مطلوبہ تربیت حاصل نہ ہونا بتایا جاتا ہے۔

مزید : جرم و انصاف /علاقائی /خیبرپختون خواہ /پشاور