سیہون زیادتی کیس، بالآخر نامزد جج کا موقف بھی سامنے آگیا

سیہون زیادتی کیس، بالآخر نامزد جج کا موقف بھی سامنے آگیا
سیہون زیادتی کیس، بالآخر نامزد جج کا موقف بھی سامنے آگیا

  



جامشورو (ویب ڈیسک) سیہون میں خاتون سے مبینہ زیادتی کیس میں نامزد معطل جج امتیاز حسین بھٹو سیشن جج جامشورو کی عدالت میں پیش جبکہ مقدمے کے تفتیشی افسرڈی ایس پی اورنگزیب عباسی منیرعباسی بھی عدالت میں پیش ہوئے ہیں۔

معطل جج امتیاز حسین بھٹو آج عدالت میں عبوری ضمانت قبل از گرفتاری میں توسیع کے لیے پیش ہوئے تھے ، عدالت نے حکم دیا کہ پہلے اپنا بیان کروائیں پھر کارروائی آگے بڑھے گی ، عدالت کے معطل جج حکم پر امتیاز حسین بھٹو نے جے آئی ٹی کو اپنا بیان ریکارڈ کرایا اور کہا کہ مجھ پر جو الزامات لگائے گئے ہیں سب غلط ہیں۔

بیان ریکارڈ کروانے کے بعد عدالت میں دوبارہ پیش ہوئے، اس دوران عدالت نے حکم دیا کہ 21 تاریخ تک ملزم جج ڈی این اے کروانے کا فیصلہ کریں، ملزم جج فیصلہ کریں کہ کس لیبارٹری سے ڈی این اے کرواناہے، عدالت کی جانب سے کہا گیا کہ کسی بھی لیبارٹری سے ڈی این اے کروانے کا خرچہ خود برداشت کرناہوگا

جس پر معطل جج نےڈی این اے کے لیے اپنے وکلاءسے مشورہ کرنے کا قت مانگ لیا جس پر ایڈیشنل سیشن جج کوٹری رحمت اللہ موریو معطل جج کی درخواست پرضمانت میں21فروری تک توسیع کردی۔معطل جج کے وکلاءکی جانب سے استدعا کی گئی کہ عدالت زیادتی کاالزام لگانےوالی لڑکی کابیان لے۔واضح رہے کہ معطل جج امتیاز حسین بھٹو بیان ریکارڈ کروانے سے قبل عدالت میں پیش ہو ئے تھے ، عدالت نے جج امتیاز حسین بھٹو سے استفسار کیا تھا کہ آپ نہ بیان ریکارڈ کرارہے ہو نہ ڈی این اے ٹیسٹ کروا رہے ہیں۔

عدالت نے معطل جج امتیاز حسین بھٹو کو حکم دیتے ہوئے کہا تھا کہ آپ اپنا بیان قلمبند کرائیں پھرضمانت میں توسیع کی درخواست سنیں گے۔عدالت کے حکم پرمعطل سول جج امتیاز حسین بھٹو عدالتی پراسیکیوٹر کی موجودگی میں اپنا بیان ریکارڈ کروایا۔

یاد رہے کہ شہداد کوٹ کی سلمیٰ بروہی اور نثار بروہی پسند کی شادی کے لیے گھر سے فرار ہو کر سہون کے ایک گیسٹ ہاﺅس میں رہائش پذیر تھے جہاں 13 جنوری کو لڑکی کے اہلِ خانہ سہون پہنچے اور دونوں کو پکڑ لیا۔معاملہ پولیس تک جا پہنچا تو پولیس نے لڑکی کو بیان کے لیے سینئر جوڈیشل مجسٹریٹ امتیاز حسین بھٹو کی عدالت میں پیش کیا تاہم جج نے لڑکی کو زیادتی کا نشانہ بنا دیا۔

بعد ازاں لڑکی نے اپنے ویڈیو بیان میں الزام لگایا کہ جج نے چیمبر میں اس کے ساتھ زیادتی کی جبکہ میڈیکل رپورٹ میں بھی لڑکی سے زیادتی ثابت ہوئی ہے۔

مزید : علاقائی /سندھ /جامشورو