امن کو ششوں کیساتھ پاکستان اپنا دفاع یقینی بنائے گا:صدر مملکت

امن کو ششوں کیساتھ پاکستان اپنا دفاع یقینی بنائے گا:صدر مملکت

  

 کراچی(آئی ا ین پی) صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا ہے کہ دنیا کے نظام کو پرامن بنانے کے لیے کوششیں کرنی چاہئیں، سمندری وسائل سے استفادہ کر کے ملکی معیشت کو مستحکم کیا جا سکتا ہے۔گزشتہ روز کراچی میں میری ٹائم کانفرنس 2021کا افتتاحی سیشن سے خطاب کرتے ہوئے صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا کہ کرونا وائرس انسانیت کے لیے بہت بڑا چیلنج ہے۔ پاکستان اپنی سمندری حدود کے دفاع کے ساتھ ساتھ انسانی فلاح کے لئے بحری وسائل کے پائیدار استعمال کے متعلق بلیو اکانومی کی ذمہ دارانہ حکمت عملی اختیار کرے گا۔ پاکستان جیواکنامک مرکز میں تبدیل ہو رہا ہے اور قدرتی ماحول کے تحفظ کو یقینی بناتے ہوئے بہتر ذرائع معاش کو فروغ دینے کے سلسلے میں بلیو اکانومی کی جانب موثر اقدامات اٹھا رہا ہے۔ انسانی مفاد قابل تجدید توانائی، ماہی گیری، غذائی تحفظ، ٹرانسپورٹ، سیاحت اور موسمیاتی تبدیلیوں سے مطابقت پیدا کرنے سے وابستہ ہے، اس سلسلے میں بحری وسائل کے پائیدار استعمال کے متعلق بین الاقوامی تعاون کو فروغ دینے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ بلیو اکانومی کے فروغ کے لئے ضروری ہے کہ دنیا بحری وسائل کے غیر ذمہ دارانہ استعمال کے تدارک کے لئے سنجیدہ کوششیں کرے۔ پاکستان اپنا دفاع یقینی بنائے گا اور انسانی اقدار پر مبنی تعاون کو فروغ دینے کے لئے بھی کوششیں جاری رکھے گا۔ پاکستان وسطی ایشیا اور چین کے لئے مختصر ترین تجارتی راہداری فراہم کرتا ہے، جس طرز کی بھی معیشت ہو اسے فروغ دینے کے لئے پر امن تعاون ناگزیر ہے جس کی سمت دنیا کی اجتماعی خوشحالی کی طرف ہونی چاہیے۔اس موقع پر پاک بحریہ کے سربراہ ایڈمرل امجد خان نیازی نے اپنے خطاب میں کہا کہ پاکستان کے ساحلی علاقے حیاتیاتی تنوع سے بھرپور ہیں اور بلیو اکانومی کے حوالے سے شاندار امکانات کے حامل ہیں۔ سی پیک چین اور پاکستان کے ساتھ ساتھ پورے خطے کے لئے فائدہ مند ہے۔ کرونا وائرس صورتحال کی وجہ سے مشکلات کا سامنا کرنا پڑا، پاکستان اپنے محل وقوع کی وجہ سے خاص اہمیت کا حامل ہے۔پاکستان کے ساحلی علاقے قدرتی وسائل سے مالا مال ہیں، انڈس ڈیلٹا ریجن میں تیل و گیس کے وسیع ذخائر موجود ہیں، سی پیک سے خطے کے ملک بھی مستفید ہو سکتے ہیں۔سمندری حدود میں غیر قانونی سرگرمیوں کی روک تھام کے لیے ہر ممکن اقدامات کر رہے ہیں۔انٹرنیشنل میری ٹائم کانفرنس میں دنیا بھر سے 35سے زائد بحری افواج کے مندوبین شرکت کر رہے ہیں جس کا مقصد بلیو اکانومی کے مواقع کا جائزہ لینا اور اس حوالے سے جدید ٹیکنالوجی و اختراعات پر مبنی حل تجویز کرنا ہے۔

 صدر مملکت 

مزید :

صفحہ اول -