شہباز تتلہ قتل‘وکلاء ہڑتال کے باعث کیس میں پیش رفت نہ ہوسکی

شہباز تتلہ قتل‘وکلاء ہڑتال کے باعث کیس میں پیش رفت نہ ہوسکی

  

لاہور(نامہ نگار)سیشن عدالت نے سابق اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل شہباز تتلہ کے اغوا ء اور قتل میں ملوث سابق ایس ایس پی مفخر عدیل کے مقدمہ کی سماعت 20 فروری تک ملتوی کر دی،گزشتہ روزوکلاء ہڑتال کے باعث کیس میں پیش رفت نہیں ہوسکی،اس کیس کے دیگر شریک ملزمان میں اسد سرور اور عرفان علی شامل ہیں ایڈیشنل سیشن جج ارشد جاوید نے کیس کی سماعت کی،عدالت نے گزشتہ روزگواہان کو بیان قلمبند کرانے کیلئے طلب کر رکھا تھا،گزشتہ روزملزمان کو جیل حکام کی جانب سے عدالت میں پیش کیا گیا،پولیس کی تفتیشی رپورٹ کے مطابق غیرت کے نام پر اپنے قریبی دوست کو ساتھیوں کے ساتھ ملکر قتل کرنے والے سابق ایس ایس پی مفخر عدیل کی پنجاب پولیس کی جانب سے گرفتاری عمل میں لائی گئی تھی، مقتول شہباز تتلہ کے اغوا کا مقدمہ 7 فروری 2020 کو تھانہ نصیر آباد میں درج کیا گیا تھا، ملزم مفخر عدیل کے علاوہ دیگر ملزمان میں اسد بھٹی اور کانسٹیبل عرفان قتل میں ملوث ہے، دوران تفتیش مفخر عدیل نے شہباز تتلہ کو درندگی سے قتل کرنے کا اعتراف کیا۔

سابق ایس ایس پی مفخر عدیل نے مزیداعتراف کیا کہ اس نے شہباز تتلہ کو درندگی سے قتل کر کے نعش کو تلف کر دیا تھا۔

مزید :

علاقائی -