ایک ارب روپے کی ہیر ا پھیری کا الزام ،جاوید آفریدی بھی میدان میں آگئے 

ایک ارب روپے کی ہیر ا پھیری کا الزام ،جاوید آفریدی بھی میدان میں آگئے 
ایک ارب روپے کی ہیر ا پھیری کا الزام ،جاوید آفریدی بھی میدان میں آگئے 
سورس:   twitter

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )مقامی اخبار ’بزنس ریکارڈر‘کی ایک رپورٹ میں ایم جی کیپٹل نامی کمپنی پر ایک ارب دس کروڑ روپے کی ٹیکس چوری کا الزام لگا یا گیا ہے جس پر معروف بزنس مین جاوید آفریدی بھی میدان میں آگئے ہیں ۔

مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاوید آفریدی نے کہا کہ ایک عرصہ تک پاکستان کی آٹو مارکیٹ کے کسٹمرز کا یہاں مخصوص کاروباری سامراج اور استحصالی طبقہ انتہائی زیادہ قیمتوں کے ساتھ نہایت ہی پست درجے اور بوسیدہ ماڈلز کے گاڑیوں کے ساتھ استحصال کر رہی تھی،اس استحصالی مارکیٹ میں عوام کو خریدی گئی گاڑیوں کے محض حصول کے لیے اربوں روپے مارکیٹ مافیا کے نذر کرنے پڑتے،عوام کی مشکلات کا مداوا کرنے اور ان کو آسان قیمتوں پر نہایت اعلیٰ معیار کی گاڑیوں کی فراہمی کے لیے مارکیٹ میں ایک نئے کردار نے قدم رکھا۔جاوید آفریدی نے کہا کہ آٹو مارکیٹ کے اس خوبصورت انقلاب کا مقابلہ کرنے کی بجائے مخالفین نے افواہوں اور اخلاق سے گری ہوئی الزامات کا سہارا لینا مناسب سمجھا۔کیونکہ میدان میں مقابلہ کرنے کے لئے نہ تو انکے پاس معیار تھا نہ صلاحیت،مگر ہم پاکستان کے آٹو انڈسٹری میں مقابلے اور دیانتدارانہ مقابلے کی بنیاد رکھنا چاہتے ہیں اگرچہ یہ سوچ ہما رے ملک میں بدقسمتی سے ناپید ہے مگر ہم اس سوچ کے ساتھ مارکیٹ کے کردار ،معاملات ،عوام کے ساتھ برتاو میں انقلاب لانا چا ہتے ہیں۔ان کا مزید کہنا تھا کہ آئیں ایمانداری اور مقابلے کے جذبے سے لیس ہوکر ھم اس مارکیٹ کو کوالٹی کا نشان، عوام کی بہتر خدمت کے لئے مثال اور آسان قیمتوں پر بہترین گاڑیوں کی فراہمی کے لئے ایک جانا پہچانا نام بنا دیں۔

واضح رہے کہ مقامی اخبارکی رپورٹ میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ ایف بی آر ایم جی کیپٹل نامی کمپنی کی جانب سے چین سے پاکستان لائی گئی گاڑیوں کی انڈر انوائسنگ کے معاملے کی تحقیقات کر رہی ہے ۔

مزید :

قومی -