ٹی 20 میں سوویں جیت پاکستان کے نام

ٹی 20 میں سوویں جیت پاکستان کے نام
ٹی 20 میں سوویں جیت پاکستان کے نام

  

 گزشتہ بلاگ میں آج کے میچ میں ٹاس کی اہمیت پر بات کی تھی۔ پاکستان پہلے دونوں میچوں میں ٹاس ہارنے کی وجہ سے ایسے نمی والے موسم اور پچ کنڈیشن میں پہلے بیٹنگ کرنے پر مجبور رہا۔ آج کپتان بابر اعظم ٹی 20 سیریز میں اپنا پہلا ٹاس جیتے اور ذہنی طور پر پچاس فی صد میچ وہ جیت گئے۔ ٹاس ہارنے والی ٹیم کو مشکل کنڈیشنز میں کوئی بھی سکور ڈیفینڈ کرنا مشکل ثابت ہونا تھا۔ گراؤنڈ میں نمی، باؤلرز اور فیلڈرز دونوں کے لیے ہی کسی بھی حوالے سے سازگار ثابت نہیں ہوسکتی تھی۔  

گزشتہ شائع ہونے والے بلاگ میں جن دو ناگزیر تبدیلیوں کا ذکر کیا وہ آج کے میچ میں ہوئیں۔ افتخار احمد اور حارث رؤف کی جگہ آصف علی اور حسن علی کو ٹیم کا حصہ بنایا گیا۔ان کے ساتھ ساتھ خوشدل شاہ کی جگہ کویٹہ گلئڈیٹرز کے لیگ سپنر زاہد محمود کا ڈیبیو بھی ہوا۔ پاکستان کو فائنل الیون میں کی جانے والی تبدیلیاں بھا گئیں اور ڈیبیو پر لیگ سپنر نے شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے تین وکٹیں لے کر پاکستان کو میچ جیتنے کی راہ پر لگا دیا۔ پاکستانی باؤلنگ کا آغاز تباہ کن تھا محض پینسٹھ رنز کے مجموعے پر جنوبی افریقہ کے سات کھلاڑی پویلین لوٹ چکے تھے۔ تمام پاکستانی باؤلرز نے اپنا بھرپور حصہ ڈالا خاص کر سپنرز نے آج جنوبی افریقی بلے بازوں کی بالکل چلنے نہیں دی۔ 

اس کے بعد ڈیوڈ ملر کی ٹیل اینڈرز کے ساتھ سنچری پارٹنرشپ نے جنوبی افریقہ کو واپس میچ میں لاکھڑا کیا۔ڈیوڈ ملر نے بلاشبہ ایک بہادرانہ اننگز تراشی اور پچاسی رنز جنوبی افریقہ کے ٹوٹل میں جوڑنے میں کامیاب ہوئے اور جنوبی افریقہ نے پاکستان کو جیتنے کے لیے ایک سوپینسٹھ رنز کا ایک مناسب مجموعہ سکور بورڈ پر سجا دیا۔

پاکستانی بیٹنگ کا آغاز بہتر رہا مگر تبریز شمسی پوری سیریز کی طرح آج بھی پاکستانی بلے بازوں پر چھائے رہے۔ اپنے چار اوورز کے سپیل میں محض پچیس رنز کے عوض پاکستانی ٹاپ آرڈرکے چار بلے بازوں کو پویلین چلتا کیا۔پاکستانی بلے باز پوری سیریز کےدوران لیگ سپنر کی گھومتی گیندوں کو سمجھنے کی کوششیں کرتے رہے۔ تبریز شمسی آنے والے دنوں میں یقیناً جنوبی افریقہ کے لیے بہت کار آمد ثابت ہوں گے۔

 پاکستان اور کرکٹ شائقین کے لیے خوشی کی خبر یہ رہی کہ بابر اعظم کی روٹھی فارم واپس لوٹ آئی اور کپتان نے سیریز کے فیصلہ کن میچ میں چوالیس رنز جوڑ ے۔ قومی کرکٹ ٹیم کے کپتان نے پاکستان سپر لیگ سے پہلے ہی دوسری ٹیموں کے لیے خطرے کی گھنٹی بجا دی ہے۔ تبریز شمسی کی تباہ کن باؤلنگ کے باوجود ٹیل اینڈرز میں محمد نواز اور حسن علی نے ایک سو پینسٹھ رنز کا ہدف ایک اوور قبل حاصل کرکے پاکستان کو ٹی 20 میچوں میں سوویں جیت دلوا کر ایک منفرد ریکارڈ قائم کردیا۔ پاکستان دنیائے کرکٹ کی ٹی20 ٹیموں میں سو میچز جیتنے والی پہلی اور دنیا کی واحد کرکٹ ٹیم ہے۔پاکستان نے اب تک ایک سو چونسٹھ میچز کھیلے ہیں جن میں سے سو میچوں میں کامیابی سمیٹی ہے جبکہ انسٹھ میچوں میں پاکستان کو شکست کا مزہ چکھنا پڑا ہے۔ تین میچز ٹائی اور دو میچز بغیر نتیجے کے رہے ہیں۔

مین آف دی میچ کا ایوارڈ محمد نواز اور مین آف دی سیریز کا ایوارڈ محمد رضوان کے نام رہا۔ بابر اعظم نے ٹی 20 اور ٹیسٹ سیریز میں کامیابی کی بڑی وجہ ڈومیسٹک پلیٹ فارمز پر پرفارم کرنے والے کرکٹرز کی قومی ٹیم میں شمولیت کو قرار دیا ہے۔

نوٹ:یہ بلاگر کا ذاتی نقطہ نظر ہے جس سے ادارے کا متفق ہونا ضروری نہیں ۔

مزید :

کھیل -بلاگ -