بلوچستان امن وامان کے حوالے سے مفصل رپورٹ طلب ،شروع دن سے بنیادی انسانی حقو ق کی بات کی: سپریم کورٹ

بلوچستان امن وامان کے حوالے سے مفصل رپورٹ طلب ،شروع دن سے بنیادی انسانی حقو ق ...
بلوچستان امن وامان کے حوالے سے مفصل رپورٹ طلب ،شروع دن سے بنیادی انسانی حقو ق کی بات کی: سپریم کورٹ

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) چیف جسٹس آف پاکستان نے اپنے ریمارکس میں کہاہے کہ بلوچستان میں امن وامان کا مسئلہ جوں کا توں ہے، پہلے دن سے بنیادی انسانی حقوق کے نفاذ کی بات کر رہے ہیں اور صوبے میں امن وامان کے حوالے سے مفصل رپورٹ طلب کر لی۔چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے تین رکنی بنچ نے بلوچستان امن وامان کیس کی سماعت کی۔دوران سماعت ایڈووکیٹ جنرل بلوچستان نے عدالت کو بتایا کہ صوبہ میں گورنر راج کا نفاذ کر دیا گیا جس کے نوٹیفکیشن کی عدالت نے کاپی طلب کر لی۔چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ کوئٹہ اور مستونگ کے واقعات کے ملزمان کو کیوں گرفتار نہیں کیا گیا؟ جیونیوز کے مطابق عدالت نے ایڈووکیٹ جنرل کی سرزنش کرتے ہوئے کہا کہ لگتا ہے کہ چند لوگ ایسا کر رہے ہیں جنہیں آپ گرفتار نہیں کرنا چاہتے،انسانی حقوق کی صورتحال پہلے بہتر ہوئی نہ اب پیش رفت ہو رہی ہے ، قانون نافذ کرنے والے ادارے ایک دوسرے پر الزام تراشی کر رہے ہیں ،سینکڑوں لاپتہ افراد کو بازیاب نہیں کرایا گیا اور کیس کی مزید سماعت 29 جنوری تک ملتوی کر دی گئی۔

مزید :

انسانی حقوق -