دیوی کو انسان کیوں بنایا،بھارتی باپ کوڑی کوڑی کا محتاج ہو گیا

دیوی کو انسان کیوں بنایا،بھارتی باپ کوڑی کوڑی کا محتاج ہو گیا
دیوی کو انسان کیوں بنایا،بھارتی باپ کوڑی کوڑی کا محتاج ہو گیا

  

نئی دلی (نیوز ڈیسک) یہ دردناک کہانی 9 سالہ بھارتی بچی ’لکشمی ٹائما‘ کی ہے۔ 2005ءمیں لکشمی پیدا ہوئی تو پورا گاﺅں تحائف لے کر اس کے گھر ام آیا۔ پیدائش کے وقت اس کے آٹھ ہاتھ پاﺅں تھے، ڈکٹروں کا کہنا تھا کہ دراصل ماں کی کوک میں اس کے ساتھ ایک جڑواں بچی بھی تھی لیکن اس کی پیدائش ممکن نہ ہو سکی اور کسی وجہ سے اس کے اعضاءبھی لکشمی کے جسم کے ساتھ جڑ گئے۔

لیکن دوسری جانب توہم پرست گاﺅں والوں نے اسے دیوی بنا لیا اور کئی لوگوں نے تو باقاعدہ پوجا بھی شروع کر دی۔ لکشمی کا والد اسے شہر ڈاکٹر کے پاس لے گیا تو سرجری کے ذریعے 2007ءمیں اس کے اضافی بازو اور ٹانگیں کاٹ دی گئیں، تاہم جب وہ اپنی بیٹی کو لے کر گاﺅں واپس پہنچا تو گاﺅں والوں نے یہ ماننے سے ہی انکار کر دیا کہ یہ وہی بچی ہے۔

مگر مچھ حاملہ بیوی کو کھا گیا،مچھیرے نے خوفناک انتقام لے لیا ،جاننے کیلئے کلک کریں

اب حالت یہ ہے کہ لکشمی کی صحت انتہائی خراب ہے اور جن جگہوں سے اس کے اعضاءکاٹے گئے تھے، وہاں سے رس نکلتا ہے لیکن اس کا باپ، جو کہ ایک مزدور ہے، اس کے پاس اتنے پیسے بھی نہیں کہ لکشمی کو ہسپتال لے جا سکے یا اس کا علاج کروا سکے۔ اس کی ماں کا کہنا ہے کہ ڈاکٹروں نے 2007ءمیں ہی بتایا تھا کہ 8 سال بعد ایک اور آپریشن کی ضرورت پڑے گی لیکن اب کوئی گاﺅں والا مدد کرنے کو تیار ہے نہ ہی کوئی رشتہ دار اور لکشمی ”دیوی“ کی جانب شدید خطرے میں ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس