ڈبلیو ڈبلیو ایف پاکستان کے زیر اہتمام نیچر کنزرویشن ایوارڈ کی تقریب

ڈبلیو ڈبلیو ایف پاکستان کے زیر اہتمام نیچر کنزرویشن ایوارڈ کی تقریب

 لاہور ( خبرنگار) ڈبلیو ڈبلیو ایف پاکستان نے ہیڈ آفس میں ویمن ان نیچر کنزرویشن اینڈ لیونگ پلانٹ ایوارڈ، سید اسد علی ایوارڈ برائے تحفظ قدرتی ماحول تقریب منعقد کروائی۔ اس تقریب میں ان لوگوں کو خراج تحسین پیش کیا گیا جنہوں نے ماحول کو بچانے اور اس کی آگاہی پھیلانے میں اہم کردار ادا کیا ۔ اس سال سید اسد علی ایوارڈ ’لعل بی بی‘ کو پیش کیا گیا جو کہ لسبیلہ، بلوچستان میں واقع چھوٹے سے ساحلی گاؤں کی رہائشی ہیں، آپ نے مقامی ماہی گیروں کی خدمت کے لئے اپنی زندگی وقف کر دی ہے۔ ان کو ڈبلیو ڈبلیو ایف پاکستان کے پریذیڈنٹ ایمیرایٹس سید بابر علی کی جانب سے ایوارڈ ، سرٹیفکیٹ اور ایک عدد چیک سے نوازا گیا۔ انہوں نے قدرتی وسائل کے موثر استعمال کے متعلق مقامی خواتین کو روشناس کرنے کے ساتھ ساتھ گڈانی ٹاؤن میں ساحل ویمن ویلفیئر سوسائٹی کے نام سے ایک غیر سرکاری تنظیم قائم کی جس کا مقصد ماہی گیر کمیونٹی کی خواتین کو معاشرے کا ایک فعال حصہ بنانا ہے۔ انہوں نے 60 ماہی گیر خاندانوں کی انسولیٹڈ فش باکس کے ذریعے مدد کی تاکہ وہ اپنی کشتیوں میں مچھلی پکڑنے کے معیار کو بہتر بنا سکیں۔ اس سال ویمن ان نیچر کنزرویشن ایوارڈ نزہت صدیقی اور نازیہ احسن کو دیاگیا۔نزہت صدیقی ایک ماحولیاتی ماہر تعلیم کے طور پر 630 سکولوں میں تربیتی سرگرمیوں میں مصروف رہیں۔ آپ ماحولیاتی تعلیم کی ایک اشاعت ’ صحت مندماحول اور خواتین‘ کی شریک مصنف بھی ہیں جسے ڈبلیو ڈبلیو ایف پاکستان کے پروگرام (آئی ایف اے پی) انڈس فار آل طرف سے شائع کیا گیا۔نازیہ احسن نے گورنمنٹ گرلز ہائی سکول خانسپور ، ضلع ایبٹ آباد میں ایک استانی کے طور پر نیچر کلب قائم کئے اور قدرتی وسائل کے تحفظ کی سرگرمیوں میں تقریباً 1000 ء طلبا کو بھی تربیت دی۔ آپ دونوں کو بریگیڈئیر(ر) مختار احمدنائب ایمیرآیٹس نے ایوارڈ، سرٹیفکیٹ اور چیک سے نوازا۔ اس سال دو تنظیموں کو لیونگ پلانٹ ایوارڈ سے نوازا گیا۔ ایک ایوارڈ ہمالین وائلڈلائف فاؤنڈیشن اسلا م آباد کو دریائے پونچھ اور منگلا ڈیم میں ماہسیر مچھلی کے تحفظ پر نوازا گیا۔ دوسرا ایوارڈ کینجھر مارونارا ویلفیئر اینڈ ڈویلپمنٹ آرگنائزیشن ٹھٹھہ کو جمپیرمیں تیتر کے تحفظ میں کاوشوں کو سراہنے کے لئے پیش کیا گیا

مزید : میٹروپولیٹن 1