زمین کے تنازع پر مخالفین نے ایک بچے باپ کو قتل کر دیا، رشتے دار زخمی: لواحقین کا احتجاج

زمین کے تنازع پر مخالفین نے ایک بچے باپ کو قتل کر دیا، رشتے دار زخمی: لواحقین ...

لاہور(بلال چودھری) مناواں کے علاقہ میں زمین کے تنازع پر مخالفین نے گھات لگا کر فائرنگ کر کے ایک بچے کے باپ کو قتل اور اس کے رشتہ دار کو شدید زخمی کر دیا اور موقع سے فرار ہو گئے۔پولیس نے جائے وقوعہ سے شواہد اکٹھے کر کے مقتول کی نعش کو پوسٹ مارٹم کے لیے مردہ خانہ میں جمع کروا دیا۔بعد ازاں پولیس کے رویہ کے خلاف مقتول کے لواحقین نے جی ٹی روڈ پر شدید احتجاج کیا اور ٹائر جلا کر روڈ کو دونوں جانب سے بلاک کر دیا ۔اطلاع ملنے پر پولیس کی بھاری نفری پولیس حکام سمیت موقعہ پر پہنچ گئی اور دو گھنٹے طویل مذاکرات کے بعد انصا ف کی فراہمی کی یقین دہانی پر مظاہرین منتشر ہو گئے ۔مظاہرین نے الزام لگایا کہ ملزمان نے پہلے بھی فائرنگ کر کے ایک شخص کو زخمی کر دیا تھا لیکن پولیس اہلکاروں نے مبینہ طور پر ان سے رشوت لے کر ان کو گرفتار نہیں کیا اور آج ان کی فائرنگ سے یہ واقعہ پیش آیا ہے۔تفصیلات کے مطابق مناواں کے علاقہ اڈہ چھیل کا رہائشی محمد ناظم حسین پراپرٹی کا کام کرتا تھا۔گزشتہ روز وہ اپنے کزن محمد علی کے ساتھ برکت مارکیٹ میں ایک شادی کی تقریب میں شرکت کے لیے نکلا تھا کہ ہانڈو روڈ مناواں کے قریب ملزمان فیضان عرف جانو،حبیب اور ابراہیم گھات لگا کر بیٹھے تھے۔نمائندہ \"پاکستان\" سے گفتگو کرتے ہوئے مقتول کے بھائی ناظم ،والد ،اور دیگر رشتہ داروں نے بتایا کہ جب محمد ناظم حسین اور علی ملزمان ناکے کے قریب پہنچے تو انہوں نے انہیں روک کر ان پر فائرنگ کر دی ۔ایک گولی ناظم حسین کے دل کے قریب لگی اور وہ موقعہ پر ہی جاں بحق ہو گیا جبکہ محمد علی کے سینے کے بائیں جانب گولی لگی اور وہ شدید زخمی ہو گیا۔ملزمان فائرنگ کرنے کے بعد موقع سے فرار ہو گئے۔ پولیس نے جائے وقوعہ پر پہنچ کر ریسکیو 1122کو بلایا جنہوں نے زخمی محمد علی کو سروسز ہسپتال میں منتقل کر دیا جہاں اس کی حالت تشویشناک ہے ۔بعد ازاں مقتول کے لواحقین نے پولیس کے خلاف جی ٹی روڈ پر شدید احتجاج کیا اور ٹائر نذر آتش کر کے جی ٹی روڈ کو ٹریفک کے لیے دونوں اطراف سے بند کر دیا ۔اس موقع پر مظاہرین نے پولیس کے خلاف شدید نعرے بازی کی ۔مظاہرین کا کہنا تھا کہ ان کا مناواں میں ایک 11مرلہ کا پلاٹ ہے جس کی ملکیت ان کے پاس ہے جبکہ ملزمان نے اس پر قبضہ کیا ہوا ہے ۔اس حوالے سے ملزمان نے پانچ ماہ قبل بھی ان کے ایک کزن محمد اکبر پر فائرنگ کی تھی جس کی وجہ سے وہ شدید زخمی ہو گیا تھا اس حوالے سے مقدمہ نمبر 361/14تھانہ مناواں میں درج ہوا ۔انہوں نے الزام لگایا کہ ملزمان نے پولیس اہلکاروں کو 2لاکھ روپے رشوت دے رکھی تھی جس کی وجہ سے انہیں پولیس اہلکار گرفتار نہیں کر رہے تھے اور وہ علاقہ میں سرعام گھومتے رہتے تھے ۔اانہوں نے مزید کہا کہ پولیس کی کرپشن کی وجہ سے ملزمان کو کھلی چھوٹ مل گئی اور انہوں نے آج محمد ناظم کو قتل کر دیا ہے ۔مظاہرے کی اطلاع ملنے پر پولیس کی بھاری نفری پولیس حکام کے ہمراہ جائے وقوعہ پر پہنچ گئی اورمظاہرین کے ساتھ 2گھنٹے طویل مذاکرات کے بعد انصاف کی فراہمی کی یقین دہانی پر مظاہرین پر امن طور پر منتشر ہو گئے۔اس حوالے سے پولیس اہلکاروں کا کہنا تھا کہ واقعہ کی تفتیش جاری ہے جلد ہی ملزمان کو گرفتار کر لیا جائے گا۔

مزید : علاقائی