پنجاب کے 5سو سے زائد سرکاری سکولوں میں قبضہ مافیا سیکیورٹی رسک بن گئے

پنجاب کے 5سو سے زائد سرکاری سکولوں میں قبضہ مافیا سیکیورٹی رسک بن گئے

لاہور(شہباز اکمل جندران//انوسٹی گیشن سیل) پنجاب بھر کے 5سو سے زائد چھوٹے بڑے سرکاری سکولوں میں قبضہ مافیا ، سیکیورٹی رسک بن گئے ہیں۔ بعض سکولوں پر مکمل طورپر جبکہ اکثر کی اراضی پر جزوری طوپر ناجائز قابضین نے پنجے گاڑھ رکھے ہیں۔معلوم ہوا ہے کہ16دسمبر 2014کو آرمی پبلک سکول پشاور میں دہشت گردی کی مذموم کارروائی کے بعد ، ملک بھر میں وفاقی اور صوبائی حکومتوں نے سکولوں و کالجوں کی سیکیورٹی پر خصوصی توجہ دینا شروع کردی ہے۔تاکہ مستقبل میں ایسے سانحات سے بچا جاسکے۔ لیکن اسی کے ساتھ ساتھ انکشاف ہوا ہے کہ پنجاب بھر کے چھوٹے بڑے سرکاری سکولوں کی اراضی پر غیر قانونی قابضین کا راج ہے۔ ذرائع کے مطابق پنجاب کے سو سے زائد چھوٹے بڑے سرکاری سکولوں میں قبضہ مافیا ، سیکیورٹی رسک بن گئے ہیں۔ان میں سے بعض سکولوں پر مکمل طورپر جبکہ اکثر کی اراضی پر جزوری طوپر ناجائز قابضین نے قبضہ کررکھا ہے۔ لیکن ضلعی انتظامیہ اور پولیس نے آنکھیں بند کررکھی ہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ بعض سکولوں کی عمارتوں یا اراضی پر مکمل طورپر جبکہ بعض پر جزوی طورپر قبضہ کیا گیا ہے۔بتایا گیا ہے کہ لاہور میں 50سے زائد پرائمری ، مڈل اور ھائی سکولوں پر مکمل اور جزوی طورپر۔ گوجرانوالہ میں 65سے زائد چھوٹے بڑے سکولوں پر مکمل اور جزوی طورپر، بھکر میں 30، بہاولپور میں 20، وھاڑی میں 15، خانیوال میں 12،ملتان میں 20، لودھراں میں8، سرگودھا میں 14، میانوالی میں 13،خوشاب میں 10، بہاولنگر میں 7، رحیم یارخان میں 20،راولپنڈی میں 40، اٹک میں 30، شیخوپوری میں 29، قصور میں 20، ننکانہ صاحب میں 10، جہلم میں 10، چکوال میں 35، ڈی جی خان میں 8، لیہ میں 10، راجن پور میں 3، اوکاڑہ میں 14، ساہیوال میں 4، پاکپتن میں 3، ٹوبہ ٹیک سنگھ میں12، فیصل آباد میں 25،منڈی بہاوالدین میں 8، نارووال میں 5اور سیالکوٹ میں 8پرائمری ، مڈل اور ھائی سکولوں پر قبضہ مافیا نے مکمل یا جزوی طورپر قبضہ کررکھا ہے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ قبضہ مافیا متاثرہ سکولوں میں آزادانہ آمدورفت رکھتے ہیں۔ اور ان پر کسی قسم کی پابندی اوررکاوٹ نہیں ہے۔

مزید : صفحہ آخر