آم کے باغات 10 سے 37 ڈگری سینٹی گریڈ تک درجہ حرارت میں لگائے جا سکتے ہیں،ماہرین

آم کے باغات 10 سے 37 ڈگری سینٹی گریڈ تک درجہ حرارت میں لگائے جا سکتے ہیں،ماہرین

لاہور(کامرس رپورٹر) پنجاب میں آم کا کل کاشت شدہ رقبہ 0.275 ملین ایکڑ اور سالانہ پیداوار 1.304 ملین ٹن ہے۔ محکمہ زراعت کے ترجمان نے کہا کہ آم کے پودوں کی بڑھوتری کے لئے موزوں ترین درجہ حرارت25 ڈگری سینٹی گریڈ ہے تاہم آم کے باغات 10 ڈگری سینٹی گریڈ سے 37 ڈگری سینٹی گریڈ تک کامیابی سے لگائے جا سکتے ہیں۔ترجمان کے مطابق آم کے پودوں سے اعلیٰ کوالٹی اور بہتر پیداوار حاصل کرنے کے لئے جہاں ان کو مناسب وقت پر غذائی اجزاء کی دستیابی، آبپاشی، بیماریوں اور کیڑوں کا بروقت تدارک اہم کردار ادا کرتے ہیں وہاں آم کے پودوں کا خوابیدگی میں جانا بھی انتہائی اہم ہے۔آم کے پودوں میں خوابیدگی غیر موزوں بیرونی یا پودوں کے اندرونی عوامل کی وجہ سے ہوتی ہے۔ حالت خوابیدگی میں آم کے پودوں کی چوٹی کے چشموں میں مختلف قسم کی تبدیلیاں رونما ہوتی ہیں جو نباتاتی بڑھوتری یا پھولوں کی شکل میں ظاہر ہوتی ہیں۔ لہٰذا آم کے باغبانوں کو چاہئے کہ وہ پودوں کو غذائی اجزاء کی فراہمی، آبپاشی، بیماریوں اور کیڑوں کے تدارک ،دھند اور کورے جیسے عوامل کا خاص خیال رکھیں تاکہ آم کے پودوں کی خوابیدگی متاثر نہ ہو اور پودوں پر زیادہ سے زیادہ پھولوں کے شگوفے نکلیں اور پیداوار میں اضافہ ہوسکے۔

مزید : کامرس

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...