نئی حکومت کی تشکیل نو میں تاخیر اور ریاست میں گورنر راج کے نفاذ کا مسئلہ

نئی حکومت کی تشکیل نو میں تاخیر اور ریاست میں گورنر راج کے نفاذ کا مسئلہ

سری نگر(کے پی آئی) نئی حکومت کی تشکیل نو میں تاخیر اور ریاست میں گورنر راج کے نفاذ کی وجہ سے اسمبلی کے اسپیکر کویندر گپتا نے 18جنوری سے شروع ہونے والے قانون سازیہ کے مجوزہ بجٹ اجلاس کو منسوخ کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ نئے اجلاس کے انعقاد کا فیصلہ نئی حکومت کرے گی۔ یہ اجلاس 18 جنوری کو جموں میں شروع ہونے والا تھا اور اس کے لئے52روزہ شیڈول بھی جاری کیا گیا تھا۔قانون سازیہ کا یہ اجلاس9مارچ تک جاری رہنے والا تھا اور اس کیلئے30سے زائد نشستیں مقرر کی گئی تھیں۔قابل ذکر ہے کہ اس بار روایات سے ہٹ کر سابق مخلوط حکومت نے مارچ کے بجائے جنوری کے مہینے میں ہی بجٹ پیش کرنے کا منصوبہ بنایا تھا لیکن مفتی محمد سعیدکے انتقال کے بعدچونکہ ریاست میں گورنر راج نافذ کردیا گیا ہے اس لئے ریاستی اسمبلی کا بجٹ سیشن بھی ختم ہوگیا ہے۔ اسپیکر کویندر گپتا نے منگل کو کہا بجٹ اجلاس منسوخ ہوگیا ہے اور 18جنوری سے اب اسمبلی کا اجلاس نہیں ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ اب نئی حکومت ہی نئے بجٹ اجلاس کے بارے میں حتمی فیصلہ لے گی۔کویندر گپتا کے مطابق بجٹ اجلاس کیلئے اسمبلی سیکریٹریٹ کو ممبران کی طرف سے سینکڑوں سوالات، تحاریک اور قراردادیں موصول ہوئی ہیں ، جن کو نئی حکومت کے بجٹ اجلاس میں برقرار رکھا جاسکتا ہے۔

مزید : عالمی منظر