دہشت گردی ختم نہیں ہوئی ضرب عضب کی وجہ سے کم ہوئی ،رحمن ملک

دہشت گردی ختم نہیں ہوئی ضرب عضب کی وجہ سے کم ہوئی ،رحمن ملک

اسلام آباد (آن لائن) پاکستان پیپلزپارٹی کے مرکزی رہنماء سینیٹر رحمن ملک نے کہا ہے کہ میں نے بھارت کو پہلے بھی شیشہ دکھایا تھا اگر بھارت نے پاکستان پر کوئی الزام لگایا تو پورے ثبوتوں کے ساتھ ان کا جواب دیا جائے گا۔ دہشت گردی ختم نہیں ہوئی ضرب عضب کی وجہ سے کم ہوئی ہے۔ نیشنل ایکشن پلان پرجن وزارتوں نے عمل نہیں کیا ان سے بھی پوچھا جانا چاہیے۔ تھر کے معاملات کو دیکھنے کیلئے ایک سیل قائم کرنا چاہیے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پارلیمٹ کے سامنے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ انہوں نے کہا کہ ملک سے دہشت گردی ختم نہیں ہوئی اس کی شدت کبھی کم ہوجاتی ہے اور کبھی اس میں تیزی آجاتی ہے ۔ ضرب عضب کی وجہ سے اس میں کمی ہوئی ہے جن وزارتوں نیشنل ایکشن پلان پر عمل نہیں کیا ان سے بھی ضرور پوچھا جانا چاہیے۔ رحمن ملک نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ پاکستان ویلفیئر سٹیٹ نہیں ہے ۔ تھر کے لوگوں کو میڈیکل اور خوراک کی سہولیات ملنی چاہئیں ۔ صرف سندھ حکومت پر الزقام لگانا ٹھیک نہیں ہے ۔ تھر کے معاملات کو دیکھنے کیلئے ایک سیل قائم کیا جانا چاہیے جو روزانہ کیبنیاد پر تھر کے لوگوں کے مسائل کو سن سکے۔ انہوں نے کہا کہ میں نے جب بھی بان کی مون کو خط لکھا تو انہوں نے نوٹس لیا۔ سعودی عرب اور ایران کے معاملات پر اور داعش کے حوالے سے بان کی مون نے نوٹس لیا ہے۔ کوئی بھی مسئلہ ہے تو اس کو لیڈر ہی حل کرتے ہیں پاکستان کو سعودی عرب اور ایران کے معاملے میں ثالث کا کردار ادا کرنا چاہیے اور اس مسئلے پر سوچ سمجھ کر بیان دینا چاہیے اس مسئلے پر انٹرنیشنل سطح پر کوشش کرنی چاہیے کیونکہ اس کے اثرات پوری دنیا پر پڑیں گے ۔ انہوں نے کہاکہ ملالہ پر حملے کا آج تک پتہ نہیں چل سکا اور سوات میں جو حعلی ویڈیو بنائی جاتی رہیں نیشنل ایکشن پلان کے تحت ان کے خلاف بھی کارروائی کی جانی چاہیے

مزید : صفحہ اول

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...