وطن سے وابستگی غیر متزلزل ہے، آنچ نہیں آنے دینگے،سعودی شیعہ علما

وطن سے وابستگی غیر متزلزل ہے، آنچ نہیں آنے دینگے،سعودی شیعہ علما

جدہ (محمد اکرم اسد) سعودی عرب کے شیعہ علماء اور دانشوروں نے ایران کی جانب سے فرقہ واریت کا کارڈ استعمال کرنے کی کوششوں کو پوری قوت سے مسترد کردیا۔ انہوں نے ایران کو واضح الفاظ میں پیغام دیا ہے کہ ہماری وطن سے وابستگی غیر متزلزل ہے اس پر آنچ نہیں آنے دی جائے گی۔ مٹھی بھر منحرفین کی سرگرمیاں اکثریت کی ترجمان نہیں۔ انہوں نے تہران سفارتخانے اور مشہد میں قونصل خانے میں آتشزدگی کے واقعہ پر شدید غم و غصہ ظاہر کرتے ہوئے اسے شرپسندی قرار دیا۔ انہوں نے الوطن اخبار سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ایران میں سعودی سفارتخانے پر حملہ مملکت کے شیعہ فرقے کے ایک ایک فرد پر حملہ ہے۔ الساحل محلے کے ایڈیٹر انچیف شیخ حبیب آل جمیع نے واضح کیا کہ ہم علاقائی گروپوں کے چکر میں پڑنے والے نہیں، ہمارا جینا مرنا سب سعودی عرب کے ساتھ ہے۔ القطیف میں بلدیاتی کونسل کے سابق ڈپٹی چیئرمین نبیر عبدالمحسن ابراہیم نے کہا کہ سعودی عرب کے شیعہ باشندے ایرانی سیاست کو مکمل طور پر مسترد کرتے ہیں۔ ایک شیعہ عالم دین سکالر شیخ ریاض السلیم نے کہا کہ شیعہ فرقے کے فقہا تقلید اور الولاء (انتساب) میں فرق کرتے ہیں۔ سعودی شیعہ ایران کی جانب سے اپنے فرقے کی تعلیمات کو سیاسی رنگ دینے کے حق میں نہیں ہیں۔ یہ لوگ فرقہ وارانہ اختلافات کو سیاسی استحصال کے لئے استعمال کرنے کے خلاف ہیں۔ایک اور قلمکار حسین انسان نے توجہ دلائی کہ تہران میں سعودی سفارتخانہ اور سعودی قونصل خانہ مملکت کے شیعہ زائرین کی سال بھر خدمت کرتے ہیں۔ آخر ان میں آگ لگا کر کس کی خدمت کی گئی ہے؟

مزید : علاقائی