انصاف کی بہتر فراہمی کیلئے نظام کی تبدیلی ضروری ہے، جسٹس سید منصور علی

انصاف کی بہتر فراہمی کیلئے نظام کی تبدیلی ضروری ہے، جسٹس سید منصور علی

لاہور(نامہ نگارخصوصی ) لاہور ہائی کورٹ کے سینئر ترین جج مسٹر جسٹس سید منصور علی شاہ نے کہا ہے کہ سائلین کو انصاف کی بہتر فراہمی کے لئے نظام کی تبدیلی ضروری ہے ،کوئی بھی نظام خود بہ خود تبدیل نہیں ہوتا، اس کے لئے سخت محنت، دلچسپی اور شبانہ روز کوششیں درکار ہوتی ہیں۔ جوڈیشل سسٹم کو بہتر کرکے سائلین کے لئے آسانیاں پیدا کرنا ہم سب کا مشترکہ مقصد ہے، فاضل جسٹس یورپین یونین کے پروگرام انصاف تک آسان رسائی کے زیر اہتمام کیس فلو مینجمنٹ کے موضوع پر ہونے والے ایک سمپوزیم سے خطاب کر رہے تھے۔ اس موقع پر لاہور ہائی کورٹ سے جسٹس عائشہ اے ملک، جسٹس عابد عزیز شیخ، رجسٹرار طارق افتخار احمد، ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج لاہور نذیر احمد گجانہ، لاہور ہائی کورٹ بار ایسو سی ایشن کے صدر پیر مسعود چشتی سمیت پنجاب پراسیکیوشن ڈیپارٹمنٹ کے حکام، انفارمیشن ٹیکنالوجی کے ماہرین، عدالت عالیہ آئی ٹی سیکشن کے افسران، پروگرام کے نمائندے جون لپٹن سمیت دیگر اسٹیک ہورلڈرز بھی موجود تھے۔جسٹس سید منصور علی شاہ نے کہا کہ نظام کی تبدیلی کے بغیر جدید ٹیکنالوجی کا استعمال بے فائدہ رہے گا۔ فاضل جسٹس نے کہا لاہور ہائی کورٹ میں پنجاب انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ کے تعاون سے25کروڑ کی لاگت سے جدید ترین کیس مینجمنٹ سسٹم رائج کیا جارہا ہے۔ معروف ماہر قانون ڈاکٹر اسامہ صدیق نے مذکورہ پروگرام کے حوالے سے کی گئی ریسرچ ، تجاویز اور فائنڈنگ سے متعلق شرکاء کو آگاہ کیا۔ شرکاء نے اتفاق کیا کہ سائلین کو بہترین انصاف کی فراہمی کے لئے نظام کی تبدیلی ناگزیر ہے۔

تبدیلی ضروری

مزید : صفحہ آخر