سندھ میں جے یو آئی پیپلز پارٹی کے متبادل کے طور پر ابھر رہی ہے،راشد محمود سو مرو

سندھ میں جے یو آئی پیپلز پارٹی کے متبادل کے طور پر ابھر رہی ہے،راشد محمود سو ...

کراچی (اسٹاف رپورٹر)جمعیت علماء اسلام سندھ کے جنرل سیکرٹری راشد محمود سومرو نے کہا ہے کہ سندھ میں جمعیت علماء اسلام پیپلزپارٹی کے متبادل کے طور پر ابھررہی ہے ۔حالیہ بلدیاتی انتخابات میں حیدر آباد سے کشمور تک 340نمائندے منتخب ہوئے ہیں جبکہ 5لاکھ کے قریب ووٹ حاصل کیے ہیں ۔2018میں ہونے والے عام انتخابات کی تیاریوں کا آغاز ابھی سے کردیا گیا ہے ۔اب اسٹیبلشمنٹ سمیت کسی کو بھی انتخابی نتائج پر اثر انداز نہیں ہونے دیا جائے گا ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے بدھ کو جمعیت علماء اسلام کے صوبائی دفتر میں قاری محمد عثمان کی جانب سے بلدیاتی انتخابات میں کراچی سے منتخب ہونے والے بلدیاتی نمائندوں کے اعزاز میں دیئے گئے ظہرانے کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے کیا ۔اس موقع پر جے یو آئی سندھ کے نائب امیر قاری محمد عثمان ،جمعیت علماء اسلام برطانیہ کے جنرل سیکرٹری مولانا سید طارق شاہ نے بھی خطاب کیا ۔اس موقع پر مولانا عبدالکریم عابد ،ڈاکٹر نصیر الدین سواتی ،قاری فخر الحسن ،موالانا عاصم کریم سمیت جمعیت علماء اسلام کے نومنتخب یوسی چیئرمین حیدر شاہ ،احسان اللہ ٹکروی ،سید اکبر ہاشمی سمیت وائس چیئرمینز اور جنرل کونسلرز بھی موجود تھے ۔ راشد محمود سومرو نے کہا کہ مولانا فضل الرحمن صحیح کہتے ہیں اور میں بھی ان کے قول کو دوہرا رہا ہوں کہ اگر جمعیت علماء اسلام کے راستے سے اسٹیبلشمنٹ ہٹ جائے تو جے یو آئی تو ایک بڑی جماعت بن کر ابھرے گی ۔انہوں نے کہا کہ سندھ میں حالیہ بلدیاتی انتخابات میں سب سے زیادہ پذیرائی جے یو آئی کو ملی ہے ۔لاڑکانہ اور سکھر ڈویژن سے 70کے قریب نشستیں 10سے 50ووٹوں کے فرق سے ہارے ہیں جبکہ 700نشستوں پر مقابلہ کیا ۔انہوں نے کہا کہ لاڑکانہ شہر سے جمعیت علماء اسلام کے ایک نمائندے نے 5ہزار ووٹ حاصل کیے جبکہ اس کے مقابلے میں پیپلزپارٹی کے امیدوار کے 1500ووٹ تھے ۔گڑھی خدا بخش کی جنرل کونسلر کی سیٹ سے بھی جے یو آئی کا نمائندہ بھاری اکثریت سے کامیاب ہوا ہے ۔انہوں نے کہا کہ جب خون گرتا ہے تو انقلاب آتا ہے ۔ذوالفقار علی بھٹو اور بے نظیر بھٹو کے خون سے انقلاب آیا مگر پیپلزپارٹی نے عوام کی خدمت نہیں کی جس کے باعث عوام میں اب ان کو پذیرائی نہیں مل رہی ہے ۔انہوں نے کہا کہ کبھی پیپلزپارٹی کا منشور روٹی ،کپڑا اور مکان تھا لیکن اب ان کے منتخب نمائندوں کا منشور اپنا اچھا کھانا ،اچھے کپڑے اور ڈیفنس کے علاقے میں اچھا محل ہے ۔گلی سے منتخب ہونے والا پیپلزپارٹی کا نمائندہ پہلی فرصت میں ڈیفنس میں مکان بنانے کی کوشش کرتا ہے ۔انہوں نے منتخب نمائندوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ شہید خالد محمود سومرو کے خون سے انقلاب آیا ہے جس کے نتیجے میں سندھ میں ہمیں اتنی پذیرائی ملی ہے ۔اگر آپ لوگوں نے بھی دعوام کو کچھ ڈلیور نہیں کیا تو پھر ہمارا بھی اللہ ہی حافظ ہوگا ۔انہوں نے کہا کہ ہمارا منشور اللہ کی دھرتی پر اللہ کے نظام نافذ کرنا ہے ۔انہوں نے کہا کہ پیپلزپارٹی نے سندھ کو تباہی کے سوا کچھ نہیں دیا ۔گرینڈ الائنس کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے راشد محمود سومرو نے کہا کہ پہلے ہمیں بتایا جائے کہ 10جماعتوں کے اتحاد کو سبوتاژ کس نے کیا اور گرینڈالائنس کس کے کہنے پر بنایا گیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ الیکشن بھی لڑوایا جاتا ہے ،خرچے بھی کروائے جاتے ہیں لیکن اسٹیبلشمنٹ نتائج اپنی مرضی سے مرتب کرتی ہے ۔جمعیت علماء اسلام نے 2018میں ہونے والے عام انتخابات کے لیے ابھی سے تیاریوں کا آغاز کردیا ہے اور اسٹیبلشمنٹ سمیت نتائج کرنے والوں کو ان انتخابات پر اثر انداز نہیں ہونے دیا جائے گا ۔جے یو آئی سندھ کے نائب امیر قاری عثما ن نے اپنے خطاب میں کہا کہ حالیہ بلدیاتی انتخابات میں جمعیت علماء اسلام کے کراچی سے 4یوسی چیئرمین ،6وائس چیئرمین اور 30جنرل کونسلرز منتخب ہوئے ہیں ۔کراچی میں اگرچہ یہ تعداد کم ہے تاہم ریاستی ہتھکنڈوں کے باوجود ہم نے میدا ن خالی نہیں چھوڑا ۔انہوں نے کہا کہ باقاعدہ منصوبہ کے تحت مولانا غیاث ،مولانا فیض اللہ فیاض ،ڈاکٹرعطاء الرحمن سمیت ہمارے مضبوط امیدواروں کو ہروایا گیا ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...