جناح ہسپتال میں زیر علاج ملزم پر گولیاں برسادی گئیں

جناح ہسپتال میں زیر علاج ملزم پر گولیاں برسادی گئیں

لاہور (ویب ڈیسک) جناح ہسپتال میں اپنے دادا کے قتل کا بدلہ لینے کے لئے ملزم نے ایمرجنسی وارڈ میں زیر علاج قتل کے ملزم کو جناح ہسپتال میں اپنے دادا کے قتل کا بدلہ لینے کے لئے ملزم نے ایمرجنسی وارڈ میں زیر علاج قتل کے ملزم کو گولیاں مار کر زخمی کردیا۔ پولیس نے ملزم کو حراست میں لے لیا۔ اس واقعہ کے بعدینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن، نرسز اور پیرامیڈکس نے احتجاجاً سرجیکل ایمرجنسی میں کام بند کردیا اور حکومت سے ہسپتال کی سیکیورٹی بڑھانے کا مطالبہ کیا۔ تفصیلات کے مطابق لاہور کے سب سے بڑے ہسپتال میں حارث نامی شخص پستول لے کر ایمرجنسی وارڈ میں داخل ہوا جہاں اس نے اپنے دادا عبدالعزیز کو قتل کرنیوالے ملزم اظہر پر فائرنگ کردی۔ اظہر کو 4 گولیاں لگیں جس کے نتیجہ میں وہ زخمی ہوگئے، فائرنگ سے پورے ہسپتال میں خوف و ہراس پھیل گیا اور وہاں پر موجود مریض اپنی جانیں بچانے کیلئے زمین پر لیٹ گئے۔ اطلاع ملنے پر پولیس اور امدادی ٹمیں موقع پر پہنچ گئیں اور حارث کو حراست میں لے لیا گیا جبکہ زخمی ہونیوالے اظہر کو دوسرے وارڈ میں منتقل کرکے اس کی سیکیورٹی بڑھادی گئی۔ جوہرٹاﺅن کے رہائشی حارث نے اپنے بیان میں کہا کہ اظہر نے 2 روز قبل میرے دادا عبدالعزیز کو قتل کیا تھا جس کا بدلہ لینے کیلئے میں نے اس پر فائرنگ کی ہے۔ اس واقعہ کے بعد جناح ہسپتال کے ڈاکٹر اور دیگر عملہ ہسپتال سے باہر آگیا اور حکومت کے خلاف نعرے بازی شروع کردی اور آئے روز پیش آنے والے اس قسم کے واقعات کیخلاف احتجاجاً سرجیکل ایمرجنسی کا بائیکاٹ کیا۔ ڈاکٹرز اور عملہ نے آج ایمرجنسی سمیت او پی ڈی کے بائیکاٹ کا بھی اعلان کیا ہے۔

مزید : لاہور

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...