امریکہ پاکستان کابڑا تجارتی شراکت دار، نجی شعبے کو اقتصادی ترقی کا بڑا ذریعہ تصور کرتے ہیں: وزیراعظم نواز شریف

امریکہ پاکستان کابڑا تجارتی شراکت دار، نجی شعبے کو اقتصادی ترقی کا بڑا ذریعہ ...

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) وزیراعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ پاک امریکہ بزنس کونسل پاکستان میں تجارت و سرمایہ کاری کے مثبت تجربے کی آگاہی کے لئے امریکا کی بڑی کاروباری برادری کے ساتھ بھی شراکت کیلئے اپنا فعال کردار ادا کرے، پاکستانی قوم مضبوط اداروں اور ولولہ انگیز معیشت کے ساتھ جمہوری ملک کی حیثیت سے اپنی حقیقی صلاحیت کے حصول کی راہ پر گامزن ہے، پاکستان نجی شعبہ کو اقتصادی ترقی کا بڑا ذریعہ تصور کرتا ہے اور غیر ملکی سرمایہ کاروں کو مزید معاشی مواقع کے فروغ کے لئے ایک ضروری عمل انگیز سمجھتا ہے۔

”پاک امریکہ بزنس کونسل“ کے چیئرمین مائلز ینگ، نائب چیئرمین محمود خان، امریکی سفیر ڈیوڈ ہیل اور امریکی تاجروں، ایگزیکٹو افسران، سرمایہ کاروں اور صنعتی لیڈرز کے 14 رکنی وفدکے اعزاز میں دیئے گئے ظہرانہ سے خطاب کرتے ہو ئے وزیراعظم نواز شریف نے کہا کہ حکومت نے ادارہ جاتی ڈھانچوں کے ساتھ سازگار فضاءکی فراہمی کا تہیہ کر رکھا ہے جو نجی شعبہ کی ترقی میں سہولت فراہم کرتا ہے، حکومت معاشی یکجہتی میں اضافہ کرے گی اور پورے خطے اور اس سے آگے خوشحالی لائے گی۔انہوں نے کہا کہ پاکستان دنیا کے ان چند مقامات میں شامل ہے جس کا بہترین جغرافیہ اور وسائل ہیں۔ اس کے ساتھ ہی بڑھتی ہوئی شہری ترقی، موزوں آبادکاری، ترقی کرتا متوسط طبقہ، معاشی طور پر بااختیار خواتین اور نوجوان موجود ہیں جو ترقی کا اہم ذریعہ ہیں۔وزیراعظم نواز شریف نے کہا کہ امریکہ جو پاکستان کا انتہائی اہم معاشی اور تجارتی شراکت دار ہے، کی معروف کمپنیوں نے پاکستان میں اربوں ڈالر کی سرمایہ کاری کی ہے اور بہترین منافع حاصل کر رہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ماضی اس حقیقت کا آئینہ دار ہے کہ جن امریکی کمپنیوں نے پاکستان میں سرمایہ کاری کی، نے بھاری منافع حاصل کیا اور اب مستقبل پہلے سے بھی بہتر ہے۔ وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان کے شاندار میکرو اقتصادی اشاریئے اپنی کارکردگی خود بیان کر رہے ہیں،سالوں تک دہشت گردی سے متاثر ہونے کے باعث ہم نے بحیثیت قوم ہر قیمت پر دہشت گردی کے خاتمے کا فیصلہ کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ انسداد دہشت گردی کا جامع آپریشن ضرب عضب حوصلہ افزاءنتائج دے رہا ہے، سال 2007ءکے بعد 2015ءمیں دہشت گردی کے کم واقعات ہوئے۔ انہوں نے کہا کہ ہم دہشت گردی کے رجحان کو اس کے منطقی انجام تک پہنچائیں گے۔ انہوں نے معاشی محاذ پر ہونے والی کامیابیوں کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ یہ کامیابیاں بھی مثالی طور پر حوصلہ افزاءہیں۔ مالی سال 2015ءمیں ہماری جی ڈی پی میں 4.26 فیصد اضافہ ہوا جو گزشتہ سات سالوں میں سب سے زیادہ شرح ہے ۔ وزیراعظم نواز شریف نے کہا کہ پاک امریکہ بزنس کونسل کے ذریعے امریکی چیمبر آف کامرس پاکستان کی قریبی اور بااعتماد شراکت دار ہے جس نے دونوں ممالک کے درمیان تجارتی تعاون کو فروغ دینے کے لئے قابل تعریف کوششیں کی ہیں۔ا ن کے دورہ سے پاکستان اور امریکہ کے درمیان تجارت و سرمایہ کاری میں اضافہ کے لئے نئے امکانات کو فروغ ملے گا۔ وزیراعظم نواز شریف کا کہنا تھا کہ کہ توانائی کی قلت پر قابو پانا حکومت کی اولین ترجیحات میں شامل ہے، توانائی کی قلت پر پائیدار بنیادوں پر قابو پانے کے لئے جامع حکمت عملی تیار کی گئی ہے۔ ہم 2017ءکے آخر تک قومی گرڈ میں 10 ہزار میگاواٹ بجلی شامل کرنا چاہتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ہماری حکومت کے پہلے دو سالوں میں فی کس آمدن بڑھ کر 12.91 فیصد ہو گئی ہے،اسی عرصہ کے دوران بجٹ خسارہ کو 8.21 فیصد سے کم کر کے 5.3 فیصد پر لایا گیا ہے۔ ہمارے ٹیکسوں کے محصولات میں 33 فیصد اضافہ ہوا ہے اور ہم نے اس راہ پر گامزن رہنے کا تہیہ کر رکھا ہے۔وزیر اعظم نواز شریف کا کہنا تھا کہ عوام کو غربت سے باہر نکالنے کے لئے ہمیں پہلے خطے میں امن قائم کرنا ہوگا اس لئے پاکستان اپنے تمام پڑوسیوں کے ساتھ اچھے تعلقات چاہتا ہے،انسانی ترقی کے لحاظ سے جنوبی ایشیاءکا خطہ دنیا میں پیچھے ہے،میرا ٹھوس یقین ہے کہ مشترکہ خوشحالی ہی حقیقی اور واحد پائیدار خوشحالی ہے۔ ہم اپنے اندر اس وقت تک امن قائم نہیں کر سکتے جب تک باہر امن نہ ہو۔ انہوں نے کہا کہ اسی باعث میری حکمت عملی پرامن اور دوستانہ ہمسائیگی کی ہے۔انہوں نے کہا کہ حکومت کی خارجہ پالیسی کے اہم ستونوں میں عظیم علاقائی معاشی یکجہتی اور روابط کی حمایت اور حوصلہ افزائی کرنا ہے اور اسی سے ہمیں اپنے عوام کی مشترکہ بہبود کے لئے خطے میں امن کے ثمرات سے مستفید ہونے کے بڑے مواقع میسر آ سکتے ہیں۔

مزید : قومی

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...