پاکستانی ڈاکٹر نے برطانیہ میں بھی حاملہ خاتون کا ’دیسی طریقے‘ سے علاج کرڈالا، انتہائی افسوسناک انجام، ڈاکٹر بھاگ کر پھرسے۔۔۔

پاکستانی ڈاکٹر نے برطانیہ میں بھی حاملہ خاتون کا ’دیسی طریقے‘ سے علاج ...
پاکستانی ڈاکٹر نے برطانیہ میں بھی حاملہ خاتون کا ’دیسی طریقے‘ سے علاج کرڈالا، انتہائی افسوسناک انجام، ڈاکٹر بھاگ کر پھرسے۔۔۔

  

لندن (مانیٹرنگ ڈیسک) برطانیہ میں ایک پاکستانی ڈاکٹر اور جنوبی افریقہ سے تعلق رکھنے والے اس کے معاون ڈاکٹر نے انتہا درجے کی نااہلی اور غیر ذمہ دارانہ رویے کا مظاہرہ کرتے ہوئے ایک نوجوان مریضہ کو موت کے گھاٹ اتاردیا۔

اخبار ’ڈیلی میل‘ کے مطابق 30 سالہ سکول ٹیچر فرانسس کیپو چینی کو بچے کی پیدائش کے لئے برطانوی شعبہ صحت کے منظور شدہ ایک ہسپتال میں داخل کروایا گیا تھا۔ یہاں تعینات پاکستانی ڈاکٹر ندیم عزیز اور جنوبی افریقہ سے تعلق رکھنے والے ڈاکٹر ایرل کورنیش آپریشن کے بعد خاتون کی دیکھ بھال پر معمور تھے۔ اخبار کے مطابق دونوں ڈاکٹروں نے، جو کہ برطانوی ادارہ صحت این ایچ ایس کے تحت کام کررہے تھے، بدترین غیر ذمہ داری اور نااہلی کا ثبوت دیا جس کے باعث مریضہ جان سے چلی گئی۔ مذکورہ ڈاکٹر سانس لینے کے لئے استعمال ہونے والی مصنوعی ٹیوب مطلوبہ وقت پر لگانے میں ناکام رہے، اور مطلوبہ آلات استعمال کرنے کی بجائے مریضہ کو تکیوں کے سہارے نیم دراز کردیا، جس کی وجہ سے انہیں سانس لینے میں تقریباً ڈیڑھ گھنٹے تک مشکلات کا سامنا رہا اور بالآخر وہ ہارٹ اٹیک کی شکار ہوگئیں۔

مزید جانئے: گھر والوں سے چھپ کر بچے کو جنم دینے والی نوجوان لڑکی کا پیدا ہوتے ہی نومولود کے خلاف ایسا اقدام کہ سن کر ہی انسان گھبرا جائے

عدالت کو بتایا گیا کہ مریضہ کی ذمہ داری بنیادی طور پر 52 سالہ پاکستانی ڈاکٹر ندیم عزیز کے سپرد تھی جبکہ جنوبی افریقہ سے تعلق رکھنے والا ڈاکٹر ان کے معاون کے طور پر موجود تھا۔ ڈاکٹر ندیم عزیز کے بارے میں عدالت کو بتایا گیا کہ وہ پنجاب یونیورسٹی کے تعلیم یافتہ ہیں اور انیستھیزیا کے شعبے میں کوئی باقاعدہ تعلیم و تربیت نہ ہونے کے باوجود اس شعبے میں فرائض سرانجام دے رہے تھے۔ ڈاکٹر ایرل کورنیش کے خلاف عدالت میں قانونی کارروائی جاری ہے جبکہ ڈاکٹر ندیم عزیز کے بارے میں معلوم ہوا ہے کہ وہ برطانیہ سے فرار ہوکر پاکستان پہنچ چکے ہیں۔

اس افسوسناک واقعے کو برطانوی شعبہ صحت کے بدترین واقعات میں شمار کیا جارہا ہے اور متعلقہ ہسپتال کے خلاف بھی نااہل ڈاکٹر بھرتی کرنے کے الزامات کے تحت قانونی کارروائی کی جارہی ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس