حکم نہیں ماننا تو عدالتوں کو تالے لگادیتے ہیں ،ہائی کورٹ کے ریمارکس ،سیکرٹری قانون ،ایس ایس پی آپریشنز طلب

حکم نہیں ماننا تو عدالتوں کو تالے لگادیتے ہیں ،ہائی کورٹ کے ریمارکس ،سیکرٹری ...

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائی کورٹ کے مسٹر جسٹس سید منصور علی شاہ نے عدالتی حکم کے باوجود خاتون محتسب یاسمین عباسی کو گرفتار کر کے پیش نہ کرنے پر ناراضی کا اظہار کرتے ہوئے وفاقی سیکرٹری قانون اور ایس ایس پی آپریشنز اسلام آباد کو وضاحت کے لئے طلب کر لیاہے۔دوران سماعت فاضل جج نے ریمارکس دیئے کہ عدلیہ کے ساتھ مذاق کا سلسلہ بند کیا جائے اگر عدالتی احکامات نہیں ماننے تو عدالتوں کو تالے لگا دیتے ہیں۔عدالت نے سلیم بیگ ایڈووکیٹ کی طرف سے دائر توہین عدالت کی درخواست پر خاتون محتسب کو متعدد بار طلب کیا ،ان کے پیش نہ ہونے پر ان کے وارنٹ گرفتاری جاری کئے گئے تھے ،گزشتہ سماعت کے موقع پر وفاقی حکومت کی طرف سے ڈپٹی اٹارنی جنرل نے خاتون محتسب کے رویئے کے سامنے بے بسی ظاہر کرتے ہوئے کہ وفاقی محتسب کو عدالت میں پیشی کے حکم بارے آگاہ کیا گیا مگر انہوں نے جواب دیا ہے کہ ہائیکورٹ انہیں طلب نہیں کر سکتی، درخواستگزار کے وکیل نے نشاندہی کی کہ خاتون محتسب نے فاضل جج کے خلاف صدر کو ریفرنس بھیجنے کی درخواست دی ہے جو عدلیہ کی تضحیک کے مترادف ہے۔وفاقی خاتون محتسب کے رجسٹرار نے عدالت کو آگاہ کیا کہ خاتون محتسب نے انہیں مقدمے کا ریکارڈ فراہم نہیں کیا جس کی وجہ سے وہ عدالتی احکامات پر عمل نہیں کرا سکے۔عدالتی حکم کے باوجود خاتون وفاقی محتسب یاسمین عباسی کو گرفتار کر کے پیش نہ کرنے کا پرسخت اظہار ناراضی کرتے ہوئے سیکرٹری قانون اور ایس ایس پی آپریشنز اسلام آباد کو وضاحت کے لئے طلب کر لیا،کیس کی مزید سماعت 20 جنوری کو ہوگی ۔

مزید : لاہور

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...