کرک ‘ بجلی اور گیس کی عدم دستیابی کیخلاف عوام سراپا احتجاج

کرک ‘ بجلی اور گیس کی عدم دستیابی کیخلاف عوام سراپا احتجاج

کرک(بیورورپورٹ) کرک شہر کے نواحی قصبہ رحمت آباد میں مشران اور نو جوانوں کا گیس، بجلی ، سڑک اور دیگر گھمبیر مسائل کے خلاف ایکا، ممبران اسمبلی، ضلعی انتظامیہ اور متعلقہ محکموں پرشدیدد تنقید، تین روز کے اندر مسائل حل نہ ہونے کی صورت میں شدید احتجاج کا اعلان ، گیس ، بجلی، سڑک اور دیگر مسائل کے خلاف عمائدین علاقہ اور نو جوانوں کا احتجاجی جلسہ رحمت آبادکے مقام پر ویلیج کونسل رحمت آباد کے نائب ناظم حکیم الرحمن کی صدارت میں منعقد ہوا، جس کی سر براہی سابق اُمیدوار صوبائی اسمبلی ملک سجاد پرویز کر رہے تھے، جلسہ میں تاج محمد، نور نواز، وہاب، اختر زمان اشرف خان و دیگر نے شرکت کی، شرکاء نے مختلف تجاویز پیش کرتے ہوئے کہاکہ باہمی نا اتفاقی اور کمزور سیاست کی وجہ سے رحمت آباد میں چولہا جلانے کیلئے گیس دستیاب نہیں، عوام احساس محرومی کا شکار ہے، گیس، بجلی کی عد م دستیابی کی وجہ سے شام ہوتے ہی علاقہ اندھیرے میں ڈوب جاتا ہے، کاروبار ٹھپ ہو کر رہ گیا ہے، عوام دو سالوں سے گیس کے خالی پائپوں کو حسرت بھری نظروں سے دیکھنے پر مجبور ہیں، شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے ملک سجاد پرویز نے کہاکہ ضلعی انتظامیہ اور سوئی نادرن حکا م ہماری التجا سن کر رحمت آباد اور ملحقہ دیہات کو گیس فراہمی یقین بنائیں وگر نہ خود کو آگ لگا کر احتجاج کے آخری حد تک جائینگے، اور علاقے کو گیس کی فراہمی یقینی بنائینگے۔انہوں نے پیسکو انتظامیہ کی کارکردگی کو برائے نام قرار دیتے ہوئے کہاکہ 24 گھنٹے میں صرف ایک یا دو گھنٹے تک بجلی کی دستیابی کی صورت میں بلز جمع نہیں کرینگے، حکومت اورمحکمے منصوبہ بندی کے تحت قانونی گیس اور بجلی فراہمی کیلئے میٹرز کی تنصیب یقینی بنائیں، ہم با قاعدگی سے بلز ادا کرنے کی گارنٹی دیتے ہیں، انہوں نے کہاکہ جملہ مسائل کے حل پر ہی ہمارا احتجاج ختم ہو گا، اور مزید کہاکہ تین دن کے اندر اندر گیس بجلی اور سڑک کے مسائل کے حل پر عمل در آمد یقینی نہیں بنا یا گیا تو احتجاج کیلئے شدید لائحہ عمل طے کرتے ہوئے سڑکیں اور تیل و گیس کمپنیوں کے نقل و حمل بند کرنے یا ڈپٹی کمشنر کرک کے دفتر کے سامنے دھرنا دینے میں سے کوئی ایک فیصلہ کرینگے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر