فیروز والہ ،اغوا ہونیوالا رکشہ ڈرائیور قتل ،ورثا کا لاش سڑک پر رکھ کر احتجاج

فیروز والہ ،اغوا ہونیوالا رکشہ ڈرائیور قتل ،ورثا کا لاش سڑک پر رکھ کر احتجاج

فیروزوالہ (نمائندہ پاکستان) شاہدرہ ٹاؤن میں اغواہونیوالا نوجوان رکشہ ڈرائیورقتل ،نعش بوری بند راوی کے کنارے کھیت سے ملی ۔شاہدرہ ٹاؤن اورفیروزوالہ پولیس حدود کا تعین نہ کرسکی جس پرمقتول کے ورثا اورشہری سراپااحتجاج بن گئے مظاہرین نے لاش ریلوے پھاٹک امامیہ کالونی کے قریب رکھ کردونوں سڑکیں بلاک کردیں اورپولیس رویئے کے خلاف شدید احتجاج کیا۔بتایاگیاہے کہ شاہدرہ ٹاؤن کے علاقہ اکبرآبادکے رہائشی ابراہیم کا نوجوان بیٹا عرفان عرف مانی رکشہ لے کر چارروزقبل گھر سے باہرگیاجوواپس نہ آیا جس کیے اغواکی اطلاع شاہدرہ ٹاؤن پولیس کو دی گئی مگرپولیس نے مقدمہ درج نہ کیا اورمغوی کی تلاش کامشورہ د ے کرانہیں ٹال دیا۔کالاخطائی روڈ کی آبادی جادہ کے قریب سے مغوی رکشہ ڈرائیور کی بوری بند لاش ملی جس کی اطلاع ورثاکوملی ورثا نے لاش کے بارے میں شاہدر ہ ٹاؤن پولیس کو بتایاجنہوں نے کارروائی کرنے کے بجائے علاقہ تھانہ فیروزوالہ کی حدود کاعلاقہ قراردے کرانہیں ٹال دیا جس پرشہری سراپااحتجاج بن گئے جنہوں نے لاش سڑ ک پررکھ کراحتجاج کیا۔

دونوں تھانوں کی پولیس موقع پرآگئی حدود کاتعین ہونے پرشاہدرہ ٹاؤن کا علاقہ قراردیاگیا۔پولیس نے مقدمہ درج کرنے کی یقین دہانی کراکرٹریفک بحال کرائی۔مقتول کے ورثا کا کہناہے کہ شاہدرہ ٹاؤن پولیس بروقت مقدمہ درج کرتی توملزم پکڑے جاسکتے تھے مگرپولیس کی ٹال مٹول سے یہ واقعہ ہوااعلیٰ حکام نوٹس لیں اورذمہ دارپولیس افسروں کے خلاف کارروائی کی جائے ۔علاوہ ازیں پولیس مقتول کے رکشہ کاسراغ بھی نہیں لگاسکی ہے۔

مزید : علاقائی