افغانستان جھڑپیں حملے ،آپریشن دھماکہ ٹریفک حادثہ ،8پولیس اہلکاروں سمیت 78ہلاکتیں 54زخمی

افغانستان جھڑپیں حملے ،آپریشن دھماکہ ٹریفک حادثہ ،8پولیس اہلکاروں سمیت ...

کابل؍کوہاٹ(این این آئی) افغانستانّ میں طالبان کے دو الگ الگ حملوں] افغان سیکیورٹی فورسز کے فوجی آپریشن اور جھڑپ میں27طالبان اورداعش کے 10 شدت پسندوں ، ہرات میں مسافر بس اور فوجی گاڑی میں تصادم میں 15شہریوں کی ہلاکت اور 9ویں ضلع کی حدود میں ایک گھر میں سلنڈر دھماکہ سمیت مجموعی طورپر 72 افراد ہلاک ہوگئے جبکہ 54 دیگرزخمی ہو گئے۔ زخمیوں میں 4پولیس اور15طالبان بتائے جاتے ہیں۔ مقامی و غیرملکی میڈیا رپورٹس کے مطابق گزشتہ شب تقریباً سات بجے مسلح حملہ آوروں نے مغربی صوبہ ہرات کے شہری علاقے میں واقع ایک پولیس تھانہ پر حملہ کردیا جس کے نتیجے میں تین پولیس اہلکار اور دو شہریوں سمیت پانچ افراد ہلاک ہوگئے ۔ ہلاک ہونے والوں میں ایک بچہ اور خاتون بھی شامل ہیں۔ صوبائی گورنر کے ترجمان جیلانی فرہاد کے مطابق اس حملہ میں مزید چار پولیس اہلکارزخمی بھی ہوگئے جبکہ پولیس کی جوابی فائرنگ سے ایک حملہ آور بھی مارا گیا اور بارود سے بھری ایک گاڑی کو بھی قبضہ میں لے لیا گیا۔دریں اثنا جنوبی صوبہ قندہار کے ضلع سپین بولدک میں طالبان نے افغان سیکیورٹی فورسز کی چوکی پر حملہ کردیا جس کی زدمیں آکر پانچ سیکیورٹی اہلکار ہلاک ہوگئے۔ صوبائی ترجمان عزیزاحمدعزیزی کے مطابق جوابی کاروائی میں سات طالبان بھی ہلاک کردیئے گئے ۔ادھر افغان فوجی حکام نے شمالی صوبہ فریاب میں زمینی اور امریکی فضائی آپریشن کی مددسے ضلع خواجہ سبز پوش کے گاؤں غزاری میں طالبان کے خلاف مشترکہ کاروائی کے دوران ایک مقامی کمانڈر سمیت 20 طالبان کو ہلاک کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔حکام کے مطابق ہلاک ہونے والوں میں طالبان کا مقامی کمانڈر قاری تاج الدین شامل ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ اس آپریشن میں 15 طالبان زخمی ہوگئے اور 7 کو حراست میں لیا گیا جبکہ طالبان کی کئی ٹھکانے تباہ کردیئے گئے۔ طالبان نے ان واقعات کے بارے میں کوئی بیان نہیں دیاہے۔ادھر افغان وزارت دفاع کے ترجمان غفوراحمدجواد نے صوبہ باد غیس کے ضلع جوند کے گاؤں چشمئی شیرین میں فوجی آپریشن کے نتیجے میں داعش کے 10 شدت پسندوں کو ہلاک کرنے کا دعویٰ بھی کیا ہے۔دریں اثناء امریکی فوجی ترجمان لفٹیننٹ اْوبن مینڈی نے تین روز قبل صوبہ ننگرہار میں ہونے والے امریکی ڈرون حملے میں داعش کے ایک اہم اور سینئر کمانڈر خطاب میر کو ہلاک کرنے کی تصدیق کی ہے۔ مزیدموصو لہ اطلاعات اور افغان سرکاری خبررساں ادارے کے مطابق ہفتہ کی رات افغان دارالحکومت کابل کے 9 ویں ضلع کی حدودمیں ایک گھر میں گیس سلنڈر کا دھماکہ ہوا جس کے نتیجے میں ایک ہی خاندان کے( 9)افرادجاں بحق اور پانچ دیگر زخمی ہوگئے۔ افغان وزارت صحت کے ترجمان وحیداللہ مایارنے بتایا ہے کہ زخمیوں کو فوری طورپر استقلال ہسپتال منتقل کردیا گیا۔ادھر گزشتہ روز مغربی صوبہ ہرات میں کابل ہرات شاہراہ پر مسافر بس اور فوجی گاڑی میں خوفناک تصادم کے نتیجے میں کم از کم (15) مسافر جاں بحق جبکہ 30 زخمی ہوگئے۔جاں بحق افراد میں خواتین اور بچے بھی شامل ہیں۔ زخمیوں کو فوری طورپر ہرات کے مقامی ہسپتال میں داخل کردیا گیا جہاں دس زخمیوں کی حالت نازک بتائی جاتی ہے۔مقامی حکام کے مطابق حادثہ تیزرفتاری کے باعث پیش آیا۔

افغانستان

مزید : صفحہ آخر