مقبوضہ کشمیر ، بھارتی فوج کی شہدا ء کے جنازے پر فائرنگ ، پیلٹ گنوں سے بچی سمیت 11افراد زخمی ، مودی کی آمد سے قبل وادی چھاؤنی میں تبدیل

مقبوضہ کشمیر ، بھارتی فوج کی شہدا ء کے جنازے پر فائرنگ ، پیلٹ گنوں سے بچی سمیت ...

سرینگر(مانیٹرنگ ڈیسک ،نیوز ایجنسیاں)مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوجیوں نے ضلع شوپیاں کے علاقہ سوگن میں شہید زینت الاسلام کے جنازے کے شرکاء پر فائرنگ کر دی ۔ کشمیر میڈیاسروس کے مطابق بھارتی فوجیوں نے سڑکوں پر رکاوٹیں کھڑی کر کے لوگوں کو شہید نوجوان کے جنازے میں شرکت سے روکنے کی کوشش کی تاہم لوگ پابندیوں اور رکا و ٹوں کو خاطر میں نہ لاتے ہوئے شہید نوجوان کے آبائی گاؤں پہنچے ۔ بھارتی فوجیوں نے نماز جنازہ کیلئے جمع لوگوں کی ایک بڑی تعداد کو منتشر کرنے کیلئے فائرنگ کی ، پیلٹ چلا ئے اور آ نسو گیس کے گولے داغے جس کے باعث ایک بچی اور دس افراد زخمی ہو گئے، قابض فورسز کی طرف سے نماز جنازہ کے شرکاء پر طاقت کے وحشیانہ استعمال کے بعد فورسز ا ہلکاروں اور مشتعل افراد میں جھڑپوں کا سلسلہ شروع ہو گیا،مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوجیوں کے ہاتھوں شہید ہونیو الے نوجوانوں زینت الاسلام اور شکیل احمد ڈار کی نماز جنازہ میں ہزاروں افراد نے شرکت کی۔ بھارتی فوجیوں نے زینت ا لاسلام اور شکیل احمد ڈار کو ہفتے کی شام کو ضلع کولگام کے علاقے یاری پورہ میں کٹہ پورہ کے مقا م پر محاصرے اور تلاشی کی کارروائی کے دوران شہید کیا تھا۔اطلاعات کے مطابق جنازے میں بڑی تعداد میں لوگوں کی موجودگی کے باعث زینت الاسلام کی نماز جنازہ پانچ مرتبہ جبکہ شکیل احمد ڈار کی چا ر مرتبہ ادا کی گئی۔ قابض انتظامیہ نے لوگوں کی نماز جنازہ میں شرکت سے روکنے کیلئے شہید نوجوانوں کے آبائی علاقوں کی جانب جانے والے تمام راستے رکاوٹیں کھڑی کر کے سیل کر دیے تھے تاہم لوگ رکاوٹوں کو خاطر میں نہ لاتے ہوئے نمازجنازہ میں پہنچے ۔ شہید نوجوانوں کو آزادی کے حق میں او ر بھارت کے خلاف نعروں کی گونج میں سپرد خاک کیا گیا ۔ در یں اثنا نوجوانوں کی شہادت پر جنوبی کشمیر کے مختلف علاقوں میں اتوارکو مکمل ہڑتال کی گئی۔عینی شاہدین کے مطابق ترال او ر پلوامہ کے علاقوں میں تمام دکانیں اور کاروباری ادا ر ے بند جبکہ سڑکوں پر ٹریفک معطل رہی۔ قابض انتظامیہ نے سرینگر سے بانیہال چلنے والی ریل سروس معطل کر دی ۔ ریل سروس بھارتی فوجیوں کے ہاتھوں ضلع کولگام کے علاقے یاری پورہ میں ہفتے کی شام کو شہید ہونیو الے دو کشمیری نوجوانوں کی شہادت پر علاقے میں ہونے والے مظاہروں کو پھیلنے سے روکنے کیلئے معطل کی گئی۔ دوسری طرفنریندر مودی کے مقبوضہ کشمیر کے دورہ سے قبل وادی کو فوجی چھاؤنی بنادیا گیا، مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فورسز کی ڈیڑھ ہزار اضافی نفری تعینات کردی گئی۔اس کے علاوہ ریاست بھر میں فورسز کی پٹرولنگ بھی بڑھادی گئی ہے۔واضح رہے کہ وزیر اعظم نریندر مودی دو روز بعد ضلع سمبا میں ریلی سے خطاب کر کے لوک سبھا کی انتخابی مہم کا آغاز کریں گے۔

مزید : صفحہ اول