پنجاب حکومت و اپوزیشن پروڈکشن آرڈر سے متعلق ترمیم پر متفق

پنجاب حکومت و اپوزیشن پروڈکشن آرڈر سے متعلق ترمیم پر متفق

لاہور( مانیٹرنگ ڈیسک ،اے این این) پروڈکشن آرڈر کے معاملے پر پنجاب حکومت اور اپوزیشن میں اہم پیش رفت،دونوں کا پروڈکشن آرڈر سے متعلق ترمیم پر اتفاق، حکومت پنجاب کا قائمہ کمیٹیوں کے ارکان کی تعداد بڑھانے کا فیصلہ۔تفصیلات کے مطابق پروڈکشن آرڈر کے معاملے پر پنجاب میں بھی حکومت اور اپوزیشن میں اہم پیش رفت سامنے آگئی، سپیکر پنجاب اسمبلی کو پروڈکشن آرڈر جاری کرنے کا اختیار دینے کی ترمیم کل پنجاب اسمبلی کے ایجنڈے پر رکھ دی گئی۔ پنجاب حکومت اور اپوزیشن میں گرفتار صوبائی ارکان اسمبلی کے پروڈکشن آرڈر کے معاملے پر اہم پیش رفت ہوگئی ہے۔پنجاب اسمبلی کا اجلاس (آج) ہوگا جس کے ایجنڈے میں پروڈکشن آرڈر جاری کرنے کے اختیارات سے متعلق ترمیم شامل کرلی گئی ہے۔ ذرائع کے مطابق اسمبلی قواعد و ضوابط میں ترمیم کو ایوان سے منظور کروا کر فوری نافذ العمل کیا جائے گا جس کے نتیجے میں اسپیکر پنجاب اسمبلی کو بھی پروڈکشن آرڈر جانے کرنے کا اختیار مل جائے گا۔ترمیم منظور ہوتے ہی مسلم لیگ ن کے گرفتار ایم پی اے خواجہ سلمان رفیق کو ایوان میں لانے کی درخواست کرسکے گی۔ ان کے لئے رواں سیشن میں ہی پروڈکشن آرڈر جاری کیا جائے گا۔علاوہ ازیں پنجاب اسمبلی کی پبلک اکانٹس کمیٹی کے معاملے پر حکومت پنجاب اور اپوزیشن کے درمیان مذاکرات کا ایک اور دور طے ہوگیا۔ حکومت اور اپوزیشن کی قائمہ کمیٹیوں کے معاملے پر بدھ کے روز ایک اور بیٹھک ہوگی جس میں حمزہ شہباز کو پی اے سی کی چیئرمین شپ دینے کا معاملہ زیر غور آئے گا۔ قائمہ کمیٹیوں کے معاملے پر دونوں فریقوں کی پہلے بھیایک ملاقات ہوچکی ہے۔حکومت نے پبلک اکاونٹس کمیٹی اور استحقاق کمیٹی کے ارکان کی تعداد 14 سے بڑھا کر 17 کرنے کا فیصلہ کیا ہے جبکہ دیگر قائمہ کمیٹیوں کے ارکان کی تعداد 10 سے بڑھا کر 11 کی جائے گی۔پنجاب اسمبلی کی پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کے معاملے پر بھی حکومت پنجاب اور اپوزیشن کے درمیان مذاکرات کا ایک اور دور طے ہوگیا۔پنجاب اسمبلی کااجلاس دو روز کے وقفے کے بعد آج ( پیر ) سہ پہر تین بجے شروع ہوگا ۔ اجلاس کے ایجنڈے کے مطابق اجلاس میں کمیونیکیشن ،ورکس اورسوشل ویلفیئر ، بیت المال کے محکموں کے سوالات اور توجہ دلاؤ نوٹسزکے جوابات دئیے جائیں گے۔ تحریک انصاف کی پنجاب حکومت نے اپنے دور کی پہلی قانون سازی کیلئے بھی حکمت عملی طے کر لی ہے جس کے تحت آج (پیر) کے روز تین مسودات قانون پنجاب رائٹ ٹو پبلک سروسز بل 2018،پنجاب ڈومیسٹک ورکرز بل2018اورپنجاب پرینونشن آف کنفلکٹ آف انٹرسٹ بل 2018شامل کئے گئے ہیں ۔علاوہ ازیں پنجاب حکومت اور اپوزیشن میں گرفتار صوبائی ارکان اسمبلی کے پروڈکشن آرڈر کے معاملے پر بھی اہم پیشرفت ہوئی ہے اور آج پیر کے روز اجلاس میں پروڈکشن آرڈر جاری کرنے کے اختیارات سے متعلق اسمبلی قواعد و ضوابط ترمیم کی سفارشات بھی پیش کیے جانے کا امکان ہے ۔اسمبلی قواعد و ضوابط میں ترمیم کو ایوان سے منظور کروا کر فوری نافذ العمل کیا جائے گا جس کے نتیجے میں اسپیکر پنجاب اسمبلی کو بھی پروڈکشن آرڈر جانے کرنے کا اختیار مل جائے گا۔ترمیم منظور ہوتے ہی مسلم لیگ (ن) کے گرفتار رکن اسمبلی خواجہ سلمان رفیق کو ایوان میں لانے کی درخواست کرسکے گی ۔

پنجاب اسمبلی

مزید : صفحہ اول