وفاقی وزراء پر پابندی لگانے کی باتیں کرنے والے قانون اور آئین سے بے خبر ہیں : شوکت یوسفزئی

وفاقی وزراء پر پابندی لگانے کی باتیں کرنے والے قانون اور آئین سے بے خبر ہیں : ...

پشاور (سٹاف رپورٹر)بلاول زرداری کی دھمکیاں بے زرر ہیں ان کو سنجیدہ نہ لیا جائے۔ سیدغنی کا وفاقی وزرا پرسندھ آنے کی پابندی لگانے کابیان بچگانہ اور خطرناک ہے مولانا فضل الرحمن مدارس پر سیاست کر رہے ہیں حکومت مدارس کا احترام کرتی ہے اور انہیں چڑھنے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا پارلیمنٹ سے باہر بیٹھے سیاستدان بے روزگار ہوگئے ہیں ان خیالات کا اظہار صوبائی وزیر اطلاعات وتعلقات عامہ شوکت علی یوسفزئی نے پشاور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ وفاقی وزراء پر پابندی لگانے کی باتیں کرنے والے قانون اور آئین سے بے خبر ہے یہ سب احتساب سے بچنے کے ڈرامے ہیں صوبائی وزیر نے کہا کہ مولانا فضل الرحمن کو کہاسے الہام ہو گیا ہے کہ آئے اور مدارس کے حوالے سے بیان دے رہے ہیں حکومت مدارس کا احترام کرتی ہے اور کسی مدرسے کو چڑھنے کا کوئی ارادہ بھی نہیں ہے انہوں نے کہا کہ پارلیمنٹ سے باہر رہ کر لگتا ہے مولانا صاحب کا دم گھٹتا ہے ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ پختونوں کو متحد کرنے کی باتیں کرنے والے ماضی میں آپس میں لڑتے رہے ہیں محض اسمبلی تک رسائی کے لیے ان کو پختونوں کا اتحاد یاد آرہا ہے شوکت یوسفزئی نے کہا کہ تمام اپوزیشن متحد ہو بھی جائیں تب بھی احتساب کا عمل جاری رہے گاانہوں نے کہا کہ چور کو چور کہہ دے تو نہ جانے پیپلزپارٹی کو کیوں تکلیف ہوجاتی ہے انہوں نے واضح کیا کہ ملک میں کوئی این ار او نہیں ہونے لگا۔جو جیل میں ہیں ان کو جیل میں ہی رہنا پڑے گا اور جن کے خلاف کیسز اوپن ہوئے ہیں انہیں جلد جیل جانا پڑے گا ایک سوال کے جواب میں شوکت یوسفزئی نے کہا کہ صوبائی کابینہ میں کوئی اختلاف ہے اور نہ ہی کابینہ میں توسیع پر کوئی مسئلہ۔وزیراعلی جب چاہے کابینہ میں توسیع کر سکتے ہیں وقت سے پہلے انتخابات کرانے کے سوال پر صوبائی وزیر اطلاعات نے کہا کہ ایسا کوئی معاملہ زیر غور نہیں ہے یہ مطالبہ پارلیمنٹ سے باہر بیٹھے بے روزگار ہونے والے سیاستدان کر رہے ہیں۔

مزید : کراچی صفحہ اول