شیخ القرآن والحدیث حضرت مولانا حمداللہ جان کی نمازجنازہ صوابی میں ادا

شیخ القرآن والحدیث حضرت مولانا حمداللہ جان کی نمازجنازہ صوابی میں ادا

صوابی(رپورٹ:محمدشعیب)بزرگ عالم دین ،جے یو آئی کے سرپرست اعلیٰ اور مہتمم دارالعلوم مظہرالعلوم ڈاگئی شیخ القرآن والحدیث حضرت مولانا حمداللہ جان باباجی کی نمازجنازہ ان کے آبائی گاؤں ڈاگئی میں اتوارکی شام ادا کردی گئی۔نمازجنازہ میں جے یو آئی ف کے صوبائی امیرسینیٹر مولانا عطاء الرحمن،جماعت اسلامی کے صوبائی امیر سنیٹر مشتاق احمدخان ،جے یوآئی کے مرکزی رہنماء مولانا مفتی کفایت اللہ،مولانا عزیزالرحمن ہزاروی،مولانا انوارالحق ،مولاناامین الحق ۔افغانستان سے آئے ہوئے علماء کے وفود کے علاوہ علماء،طلباء اور سیاسی ومذہبی جماعتوں کے رہنما ؤں اور کارکنوں ممبران اسمبلی منتخب نمائندوں اور ملک بھر سے تقریباً ایک لاکھ افراد نے شرکت کی۔جنازے میں لوگوں زیادہ شرکت کی سبب جنازہ دیڑھ گھنٹے تاخیر سے پڑھائی گئی جبکہ نمازجنازہ مولانا باباجی کے نواسے اسداللہ مظہری نے پڑھائی جنازے سے قبل مولانا حمداللہ جان بابا کے صاحبزادوں اشفاق اللہ خان ،مولانالطف اللہ اورنواسے مولانا اسد اللہ مظہری کی دستار بندی کی گئی اشفاق اللہ خان کو حضرت مولانا کے سیاسی جانشین اور مہتمم دارالعلوم مظہرالعلوم مولانا لطف اللہ کو جانشین اورمولانااسداللہ مظہری کومدرسے کی دینی خدمات کی جانشین مقرر کردیاگیا۔ جے یو آئی ف کے سرپرست اعلیٰ اور ممتاز عالم دین مولانا حمداللہ جان کل پشاور کے نجی اسپتال میں انتقال کرگئے تھے۔ان کے بیٹے اشفاق اللہ خان کے مطابق وہ کافی عرصے سے علیل تھے۔مرحوم دو بار جے یو آئی ف کے ٹکٹ پر قومی اسمبلی کا الیکشن لڑچکے تھے اور دونوں الیکشن جیتنے میں ناکام ہوچکے تھے۔مرحوم شیخ الہند کے شاگرد بھی رہ چکے تھے۔مرحوم افغانستان کے علاوہ جامعہ فاروقیہ کراچی میں بھی درس و تدریس کے فرائض سرانجام دے چکے ہیں۔جنازے سے قبل اشفاق اللہ خان، مولانا لطف اللہ ،مولانا اسد اللہ مظہیری اور مولانا مفتی نوید نے خطاب کرتے ہوئے مولانا حمد اللہ جان باباجی کی دینی خدمات کو زبردست خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہاکہ حضرت مولانا کی وفات پر نہ صرف علماء کرام،طلباء بلکہ اُمت مسلمہ کیلئے ایک ناقابل تلافی نقصان ہیں ہم حضرت مرحوم کے قرآن وسنت اور حدیث ودینی خدمات کوجاری رکھیں گے اور ان کے اس مشن کوپوراکریں گے ۔

مزید : کراچی صفحہ اول