ایڈ ز کنٹرول پروگرام کے افسران فنڈز کے جعلی بل بنارہے ہیں : تحریک انصاف

ایڈ ز کنٹرول پروگرام کے افسران فنڈز کے جعلی بل بنارہے ہیں : تحریک انصاف

حیدرآباد(بیورورپورٹ ) پاکستان تحریک انصاف حیدرآباد ڈویژن کے صدر خاوند بخش جہیجو اور جنرل سیکریٹری عمران قریشی نے حیدرآبادپریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے مطالبہ کیا کہ فوری طور پر سندھ میں ایڈز کنٹرول کرنے کے لئے کیمپ لگائے جائیں جبکہ پی ٹی آئی سندھ اسمبلی میں اس کے متعلق آواز بھی اٹھائے گی ۔انہوں نے بتایاکہ ایڈز کنٹرول پروگرام کے افسران فنڈز لے کر صرف جعلی بل بنا رہے ہیں جبکہ متعلقہ علاقوں میں کام نہیں کررہے ہیں ،انہوں نے کہاکہ صرف حیدرآباد کے تعلقہ دیہی میں ایڈز کے سینکڑوں مریض موجود ہیں لیکن نہ تو ان کیلئے کوئی کیمپ لگایا جارہا ہے اور نہ ہی ان کا علاج کیا جارہا ہے اور ایڈز کے نام پر ملنے والے بجٹ میں بھی کرپشن کی جارہی ہے انہوں نے کہا کہ اس وقت یہ مرض حیدرآباد کے علاوہ ٹنڈو محمد خان ، جامشورو ، کوٹری ، لاڑکانہ سمیت کئی اضلاع میں شدت سے پھیل رہا ہے جبکہ حیدرآباد کے 15 سو دیہاتوں میں سے صرف 15 دیہاتوں میں ایڈزکے حوالے سے اسکریننگ کی گئی ہے جس میں 150 مریض سامنے آئے ہیں انہوں نے کہا کہ باقی دیہاتوں میں اسکریننگ نہیں کی جارہی ہے ان علاقوں میں اسکریننگ کی جائے تو معلوم ہو کہ حیدرآباد میں کتنے ایڈز کے مریض موجود ہیں انہوں نے کہا کہ ایچ آئی وی ایڈز کنٹرول پروگرام کو گلوبل ایڈز پروگرام کے تحت فنڈز ملتے ہیں اس کے علاوہ صوبائی اور وفاقی بجٹ علیحدہ ملتا ہے مگر محکمہ صحت کے سیکریٹری محمد عثمان چاچڑ اور ایڈز کنٹرول پروگرام سندھ کے منیجر ڈاکٹر محمد یونس چاچڑ اپنی رشتہ داریاں نبھا رہے ہیں انہوں نے بتایاکہ سندھ میں ایڈز جیسا موذی مرض تیزی سے پھیل رہا ہے اور صوبائی حکومت خواب خرگوش کے مزے لے رہی ہے تحریک انصاف سندھ اسمبلی میں اس مسئلے پر بھرپور آواز اٹھائے گی ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر