سردی دھند ،بجلی گیس ’’لاپتہ‘‘ نظام زندگی مفلوج لکڑی ایل پی جی مہنگی

سردی دھند ،بجلی گیس ’’لاپتہ‘‘ نظام زندگی مفلوج لکڑی ایل پی جی مہنگی

ملتان‘وہاڑی ‘ سنانواں (سٹاف رپورٹر‘بیورو رپورٹ‘نمائندہ خصوصی) بجلی اور سوئی گیس کی لوڈشیڈنگ نے صارفین کو اذیت میں مبتلا کر دیا۔ اتوا ر کو سرکاری چھٹی کے روز بجلی کا استعمال کم ہونے کے باوجود لوڈشیڈنگ کی گئی ۔نظام زندگی مفلوج ہو کر رہ گیا۔ ملتان سمیت جنوبی پنجاب میں بدترین لوڈشیڈنگ کی جارہی ہے ٹرپنگ کا سلسلہ بھی جاری ہے ۔دوسری جانب سوئی گیس کے بحران نے صارفین کو اذیت میں مبتلا کیا ہوا ہے ۔ملتان اور گردونواح کے (بقیہ نمبر48صفحہ12پر )

بیشتر علاقوں میں سوئی گیس کی بدترین لوڈشیڈنگ کی جا رہی ہے ۔ کبھی گیس آتی بھی ہے تو پریشر نہ ہونے کے برابر ہو تا ہے ۔ خواتین لکڑی اور ایل پی جی سلنڈر استعمال کرنے پر مجبور ہیں جس پر بہت اخراجات آنے سے گھریلو بجٹ متاثر ہو رہا ہے۔صارفین نے صورتحال پر شدید احتجاج کرتے ہوئے حکومت سے سوئی گیس اور بجلی کی لوڈشیڈنگ سے نجات دلانے کا مطالبہ کیاہے ۔وہاڑی میں سردی کی شدت میں مزید اضافہ کے ساتھ سوئی گیس کی غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کا سلسلہ بھی شروع ہوگیا.شہر کے اکثر علاقوں میں سوئی گیس کی لوڈشیڈنگ اورمسلسل عدم دستیابی کے باعث بچوں سمیت بڑے افراد شدید پریشانی کا شکار ہورہے۔ شہر کے مختلف علاقوں میں سوئی گیس کی بدترین لوڈ شیدنگ جاری ہے جس کی وجہ سے ان علاقوں کے مکین جدید دور میں لکڑیوں پر کھانا پکانے پر مجبور ہیں۔شہریوں محمدسرفراز شاہد علی ظفر اقبال وارث علی اختر علی محمد اقبال شہزاد احمد حاکم علی محمد رمضان ابو بکر شفيق اویس مجید راشد عمران ودیگر کا کہنا ہے کہ حکومت آئے روز سوئی گیس اور بجلی کے نرخوں میں اضافہ کررہی ہے لیکن اس کے برعکس شہریوں کو سوئی گیس اور بجلی کی فراہمی کو یقینی بنانے کے لئے کوئی اقدامات نہیں اٹھائے جارہے ہیں۔ شہر کے تمام علاقوں میں شہریوں کو زندگی کی بنیادی سہولت کی فراہمی یقینی بنائی جائے۔جبکہ سنانواں شہر میں گیس کی لوڈشیڈنگ کی وجہ سے عوام کے چولہے ٹھنڈے پڑ گئے رہی سہی کسر بجلی کی لوڈشیڈنگ نے کاروباری زندگی مفلوج کر دی سنانواں شہر میں بجلی اور سوئی گیس کی بد ترین لوڈ شیڈنگ ہورہی ہے جس کی وجہ سے ہر طبقہ کے لوگ پریشان ہو رہے ہیں بچے جوان یا بوڑھے سب پریشانی میں مبتلا نظر آتے ہیں روزانہ کی بنیاد پر 8سے 10 گھنٹے بجلی کی لوڈشیڈنگ صبح اور شام کے ٹائم بجلی ہوتی ہی نہیں بچے صبح اٹھ کر نہانے اور شام کو پڑھنے لکھنے سے قاصر ہیں اور برے بوڑھے نماز کے اوقات پانی نہ ہونے کی وجہ سے پریشان نظر آتے ہیں اور سوئی گیس بھی صبح نماز سے پہلے ہی چلی جاتی ہے جس کی وجہ سے ملازم. اور سکول کے بچے بغیر ناشتہ کیے جانا پڑتا ہے اور شام ہوتے ہی گیس پھر بند کر دی جاتی ہے جس کی وجہ شہری کھانا پکانے کے لئے مہنگی لکڑی جلارہا اور کوئی مجبور ہو کر ہوٹل کا رخ کرتے ہیں بجلی اور گیس نہ ہونے کی وجہ سے انتہائی اذیت کا شکار ہیں عوامی اور سماجی حلقوں نے وزیر پانی بجلی اور گیس سے اور بجلی کی فورس لوڈشیڈنگ رکونے اور کھانے پکانے کے اوقات میں گیس کی فراہی یقینی بنانے کا مطالبہ کیا ہے ۔

لوڈشیڈنگ

مزید : ملتان صفحہ آخر