موٹروے: نوجوان کو چلتی گاڑی سے دھکا، اغوا کا ر فرار

موٹروے: نوجوان کو چلتی گاڑی سے دھکا، اغوا کا ر فرار

  



ملتان ( وقا ئع نگار) موٹر وے پولیس نے اغواء شدہ بچے کو والدین سے ملوا دیاہے معلوم ہوا ہے موٹر وے پولیس کے افسران کو پٹرولنگ کے دوران ایک لڑکا بارش کے دوران گزشتہ روز نیم بے ہوشی کی حالت میں ملا۔جسکی عمر تقریباً 21 سال ہے۔ موٹر وے افسران پی او امتیاز احمد اور پی او قاضی سہیل نے مذکورہ لڑکے کو اپنی تحویل میں لیا۔جس کا نام بعد میں محمد آصف نعیم ولد فرزند علی ٹوبہ ٹیک سنگھ کا رہائشی معلوم ہوا۔ ریسکیو 1122 کو اطلاع دی گئی۔ لڑکے نے بتایا کہ اسے چند روز قبل کچھ نامعلوم افراد نے فیصل آباد (بقیہ نمبر38صفحہ12پر)

سے ٹوبہ ٹیک سنگھ کے راستے میں بس کے اندر نشہ آور کھانا کھلا کر اغواء کر کے نا معلوم مقام پر منتقل کر دیا تھا۔جہاں وہ مسلسل اسے انجکشن لگاتے رہے اور دھمکیاں دی کہ ہم تمہارے گردے نکال لیں گے. جبکہ گزشتہ رات مجھے نیم بے ہوشی کی حالت میں کار میں بٹھا کر موٹر وے پر چلتی ہوئی گاڑی سے دھکا دے دیا. بعدازاں آپریشنز آفیسر محمد عدیل طور نے لڑکے کے لواحقین سے رابطہ کیا اور اسے ریسکیو عملہ کی مدد سے نشتر اسپتال منتقل کیا جہاں طبی امداد کے بعد تھانہ مخدوم رشید کے ASI ربنواز نے لواحقین کی موجودگی میں لڑکے کا بیان قلمبند کیا.اس موقع پر ڈی ایس پی موٹر وے محمد عابد مرزا کا کہنا تھا کہ موٹر وے پولیس ہمہ وقت عوام کی خدمت اور حفاظت کے لیے کوشاں ہے. اور عوام سے اپیل کی کہ دوران سفر کسی اجنبی سے کوئی چیز لے کر نہ کھائیں اور کسی بھی نا گہانی صورت میں موٹر وے پولیس کی ہیلپ لائن 130پر کال کریں. اس موقع پر لڑکے کے والد نے موٹر وے پولیس کے افسران کو دعائیں دیں اور محکمہ کی پیشہ وارانہ صلاحیتوں کو سراہا.

والدین

مزید : ملتان صفحہ آخر