عدالتی نظام میں لغزش کی گنجائش نہیں، واحد مقصد سائلین کے دکھوں کا مداوا: چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ 

عدالتی نظام میں لغزش کی گنجائش نہیں، واحد مقصد سائلین کے دکھوں کا مداوا: چیف ...

  



لاہور(نامہ نگارخصوصی)چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ مسٹر جسٹس مامون رشید شیخ نے کہاہے کہ عدالتی نظام میں لغزش کی گنجائش نہیں ہے،ہمارابنیادی نصب العین سائلین کے دکھوں کا مداوا کرناہے۔ ہمارے پاس وسائل کی کمی ہے، نئے جوڈیشل کمپلیکسز، کورٹس اور دیگر سہولیات کے لئے مناسب فنڈز موجود نہیں ہیں لیکن ہماری پوری کوشش ہے کہ ججوں، وکلاء اور سائلین کو ہر ممکن سہولیات فراہم کی جائیں، ہم نے حکومت سے کہا ہے کہ بہترین انفراسٹرکچر کیلئے فنڈز فراہم کئے جائیں تاکہ ججوں اور سائلین کے لئے بہترین ماحول فراہم کیا جاسکے۔وہ گزشتہ روزپنجاب جوڈیشل اکیڈمی میں جنرل ٹریننگ پروگرام کے تحت دسویں تربیتی کورس کے افتتاحی سیشن سے خطاب کررہے تھے،چیف جسٹس نے مزید کہا کہ ہم جانتے ہیں کہ ہمارے جج محدود وسائل میں بہترین کام کررہے ہیں، چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ ہمارا بنیادی نصب العین سائلین کے دکھوں کا مداوا کرنا ہے، اگر ہم عوام کو ریلیف فراہم نہیں کرسکے تو ہماری یہ تمام محنت رائیگاں ہے،چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ صوبے کے عوام ہم پر اعتماد کرتے ہیں، اس اعتماد کو برقرار رکھیں،یاد رکھیں ہمارا سسٹم میں تھوڑی سی بھی لغزش کی گنجائش نہیں ہے۔تقریب میں رجسٹرار لاہورہائی کورٹ عبدالستار، ڈی جی ڈسٹرکٹ جوڈیشری اشترعباس، ڈی جی پنجاب جوڈیشل اکیڈمی حبیب اللہ عامر اور سیشن جج ہیومن ریسورس ساجد علی اعوان سمیت اکیڈمی کے انسٹرکٹرز اور دیگر افسربھی موجود تھے۔

مزید : صفحہ آخر