2019: گجرات پولیس کی کامیابیوں کا سال

2019: گجرات پولیس کی کامیابیوں کا سال

  



گجرات سے مرزا نعیم الرحمان

سال 2019گجرات پولیس کی کامیابیوں کا سال ثابت ہوا ویسے تو جرائم کی بیخ کنی‘انصاف کی فوری فراہمی، اور فلاح وبہبود کے حوالے سے گجرات پولیس نے رواں سال لاتعداد اہم کامیابیاں اپنے نام کی ہیں مگر سیف سٹی اور سہولت سنٹر جیسے منصوبے اپنی نوعیت میں بے مثال ہیں اہم ترین کامیابیوں میں مذکورہ منصوبے ایسے شاندار کارنامے ہیں جن پر نہ صرف آئندہ گجرات میں تعینات ہونے والے نئے پولیس سربراہان فخر کریں گے بلکہ ان کی افادیت روز بروز بڑھتی جائے گی سید توصیف حیدر کی انتھک محنت‘ خلوص اور جدوجہد سے گجرات کو پنجاب کا دوسرا سیف سٹی ہونے کا اعزاز حاصل ہوا تو جنسی‘ جسمانی‘ ذہنی‘نفسیاتی تشدد کا شکار خواتین اور بچوں کے تحفظ کیلئے اپنی نوعیت کا پہلا سہولت سنٹرقائم کر کے سید توصیف حیدر نے ایک ایسا کارہائے نمایاں سر انجام دیا جس کی نظیر ماضی میں نہیں ملتی بے سہارا‘ مظلوم خواتین اور بچوں کو انصاف کی فوری فراہمی اور تحفظ کیلئے بین الاقوامی طرز کے اس عظیم منصوبے سے گجرات کو بین الاقوامی شہرت حاصل ہوئی سید توصیف حیدر جو ارادوں کے پکے اور اصولوں کے سچے محنتی پولیس سربراہ ہیں کی گجرات میں تعیناتی کو تاریخ میں ہمیشہ سنہری حروف سے لکھا جائیگاسید توصیف حیدر جو کچھ عرصہ قبل بطور ڈی پی او گجرات تعینات ہوئے انہوں نے چوہدری برادران کے آبائی ضلع گجرات کو امن کا ایک مثالی خطہ بنانے کا عہد کیا تو عملی طو رپر اسکی تعبیر پانے کے لئے جدوجہد شرو ع کر دی دن رات محنت‘ موثر حکمت عملی اور بہترین ٹیم کے ساتھ انکی مخلصانہ کوششیں رنگ لانا شروع ہوئیں تو کامیابیوں کے راستے کھلتے چلے گئے خداو ند کریم کی نصرت بھی ان کے شامل حال ہوگئی جہاں جرائم کی بڑھتی ہوئی شرح پر قابو پایاگیا وہیں گجرات پولیس کی فلاح و بہبود اور شہریوں کے لئے ایسے لازوال منصوبے پیش کیے جن کی نظیر ماضی میں نہیں ملتی انہو ں نے جہاں شہریوں کیلئے عظیم منصوبے شروع کیے وہیں پولیس کی فلاح و بہبود پر بھی خصوصی توجہ دی پولیس افسران‘ اور شہدا کے بچوں کی تعلیم کیلئے سید توصیف حیدر ڈی پی او گجرات نے اہم قدم اٹھاتے ہوئے ایپیکس گروپ آف کالجز کیساتھ اہم معاہدہ کیا جس کے تحت شہدا کے بچوں کو بالکل مفت تعلیم فراہم کی جائے گی، جبکہ حاضر سروس افسران اور بچوں کے بچوں کے لئے کالج میں داخلہ بالکل مفت ہوگا ماہانہ فیس میں بھی انہیں پچاس فیصد تک رعایت دی جائے گی گجرات پولیس اور کالج انتظامیہ کے مابین ہونے والے اس اہم ایم ا و یو سے پولیس شہدا اور حاضر افسران و ملازمین کے بچے بھرپور استفادہ حاصل کریں گے جرائم کی بات کی جائے تو ان کی تعیناتی کے دوران سنگین نوعیت کے مقدمات میں شاید ہی کوئی ایسا کیس ہو جس کا ابھی تک سراغ نہ لگ سکا ہویا ملزمان گرفتار نہ ہوئے ہوں قتل‘ اقدام قتل‘ ڈکیتی‘ راہزنی اور منشیات کے مقدمات میں ملزمان کی گرفتاریوں بالخصوص اشتہاریوں کی گرفتاری میں گجرات پولیس کو اہم کامیابیاں حاصل ہوئیں پولیس نے مجموعی طو رپر 86ڈکیت گینگز کے 2ہزار 350اشتہاریوں کو گرفتار کیا 6 سر کی قیمت والے اشتہاری بھی قانون کی گرفت میں آ ئے ملزمان کے قبضہ سے 15کروڑ روپے سے زائد کا مال مسروقہ جس میں گاڑیاں‘ موٹر سائیکلیں‘ مال مویشی اور نقدی شامل ہے برآمد کر کے اصل مالکان کے حوالے کی گئیں ناجائز اسلحہ کے خلاف مہم میں 894ملزمان کے قبضہ سے 51کلاشنکوف،65بندوق،4کاربین، 668پسٹل، 79رائفل سمیت 7734گولیاں برآمد کی گئیں جو یقینا بڑی کامیابی ہے منشیات فروشی کے خلاف مہم کے دوران بھی پولیس کو اہم کامیابیاں ملیں مجموعی طو رپر 968گرفتار ملزمان کے قبضہ سے 375کلو گرام چرس،12کلو گرام ہیروئن،9784بوتل شراب اور 125کلو گرام سے زائد بھنگ برآمد ہوئی کیٹگری اے کے 775 کیٹگری بی 1558ملزمان شکنجے میں جکڑے گئے مجموعی طو رپر 2درجن کے قریب اندھے قتل کی وارداتوں کا سراغ لگا کر ملزمان کو حراست میں لیا گیا۔تھانہ سٹی لالہ موسی کے علاقے محلہ کریم پورہ میں پاکستان پیپلز پارٹی سے تعلق رکھنے معروف سیاسی ورکر سابق کونسلر محمد حفیظ کا اپنے ہی لخت جگر بدبخت بیٹے خرم شہزاد کے ہاتھوں قتل کی دلخراش واردات ہوئی توملزم کو چند ہی گھنٹوں میں گرفتار کر لیا گیا چند یوم قبل تھانہ صدر جلالپو رجٹاں کے گاؤں چوپالہ میں غیرت کے نام پر خاتون سمیت دو افراد محمد سجاد اور سعدیہ بی بی کے قتل میں ملوث تین سگے بھائیوں تنویر احمد‘ نوید احمد اور سلیمان احمد کو چوبیس گھنٹے کے اندر گرفتار کر کے قانون کے کٹہرے میں کھڑا کیا گیا مختاط اندازے کے مطابق 120سے زائد افراد جن میں خواتین بھی شامل ہیں کو مختلف وجوہات پر قتل کیا گیا دو درجن کے قریب خواتین اپنے رشتہ داروں کے ہاتھوں ماری گئیں پولیس نے جدید وسائل کی مدد سے بیشتر مقدمات کو ٹریس کر کے ملزمان کو گرفتار کیا گجرات کے 23تھانہ جات میں گزشتہ برس 6ہزار کے قریب مختلف نوعیت کے مقدمات درج ہوئے جن میں گذشتہ برسوں کے مقابلہ میں مجموعی طور پرکمی ریکارڈ کی گئی۔ تھانہ سول لائن مقدمات کے اندراج میں سرفہرست رہا جہا ں مختلف نوعیت کے 788 مقدمات درج کیے گئے دوسرے نمبر پر 760 مقدمات کے ساتھ تھانہ کنجاہ‘ 535مقدمات کے ساتھ تھانہ صدر کھاریاں تیسرے نمبر پر رہا تھانہ لاری اڈا میں 498 تھانہ دولت نگر میں 415 تھانہ ٹانڈہ میں 340 تھانہ صدر جلالپور جٹاں میں 460 تھانہ بولانی میں 130 جبکہ تھانہ کھاریاں کینٹ میں صرف14 مقدمات درج کیے گئے۔ گجرات پولیس نے کالجز اور یونیورسٹی میں گروپ بنا کر پرتشدد کارروائیوں کی ویڈیو وائرل کرنے والے طالب علموں کو بھی لگا م ڈالنے کے لئے موثر کارروائیاں کیں جس میں اہم کامیابیاں حاصل ہوئیں۔ ڈی ایس پی ریاض الحق کی زیر نگرانی ایس ایچ او تھانہ اے ڈویژن محمد اسلم کدھر کو گجرات پولیس کے کمانڈر کی طرف سے طالبعلم کے روپ میں غنڈہ گردعناصر کی گرفتاری کا ٹارگٹ سونپا گیا جنہوں نے اپنی محنت اور پیشہ وارانہ صلاحیتوں کی بدولت طالبعلم کے ایسے کئی گینگز کو گرفتار کیا جو مختلف مقامات پر دنگا فساد‘ لڑائی جھگڑے‘ مار کٹائی‘ فائرنگ جیسے واقعات میں ملوث اور سوشل میڈیا پرپرتشدد ویڈیو وائرل کر کے خوف اور دہشت کی علامت بن رہے تھے مذکورہ ملزمان کی گرفتاری سے تعلیمی اداروں میں غنڈہ گردی کے کلچر کی حوصلہ شکنی ہوئی اور شہریوں نے سکھ کا سانس لیا۔

مزید : ایڈیشن 1


loading...