عوام نے مولاانا فضل الرحمن کے سارے پلان مسترد کر دیئے: شوکت یوسفزئی 

عوام نے مولاانا فضل الرحمن کے سارے پلان مسترد کر دیئے: شوکت یوسفزئی 

  



پشاور(سٹاف رپورٹر)خیبرپختونخوا کے وزیر اطلاعات شوکت یوسفزئی نے کہا ہے کہ مولانا فضل الرحمان کے سارے پلان ناکام اور عوام نے مسترد کر دیئے تو اب کیوں باہر نکلنے کی بات کر رہے ہیں۔ عوامی نیشنل پارٹی کی سیاست صوبے میں ختم ہو چکی ہے ماضی میں پختونوں کے نام پر ووٹ لینے والوں کو عوام نے اسمبلی سے باہر کر دیا ہے۔ کے پی وومن پارلیمانی کاکس خواتین کو با اختیار بنانے کے لیے بہتر کام کر رہی ہے جلد خواتین کو کابینہ میں جگہ دی جا رہی ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے خیبرپختونخوا وومن پارلیمانی کاکس کے لیے مقامی ہوٹل میں منعقدہ تربیتی ورکشاپ سے خطاب  اور میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ورکشاپ میں وزیر اعلیٰ کے مشیر برائے سائنس وٹیکنالوجی ضیاء اللہ بنگش، کنیڈین سینٹ میں پاکستانی نمائندہ سلمہ عطاء اللہ جان، کامن ویلتھ وومن پارلیمنٹیرین شاندانہ گلزار خان اور وومن کاکس اور خواتین ممبران صوبائی اسمبلی نے شرکت کی۔ صوبائی وزیر نے کہا کہ صوبے میں تمام سیاسی جماعتوں کو جلسے کرنے کی آزادی ہے مولانا فضل الرحمان کے تمام پلان ناکام ہو چکے ہیں انکے سارے ڈیڈ لائن اور وعدے جھوٹے نکلے اب وہ کونسا پلان بنانے جا رہے ہیں عوام انکے عزائم جان چکی ہے وہ انتشار کی سیاست کرنا چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ عوامی نیشنل پارٹی نے پختونوں کے نام پر سیاست کی لیکن پختونوں کے لیے کچھ نہیں کیا پانچ سال تک صوبے پر حکومت کی لیکن آج اے این پی اسمبلی سے باہر ہے۔ اے این پی کی سیاست ختم ہو چکی ہے وہ اپنے آپ کو زندہ رکھنے کے لیے ڈرامے کر رہے ہیں عوام ان سب کو رد کر چکی ہے۔ شوکت یوسفزئی نے کہا کہ وومن کاکس خواتین کو مزید با اختیار بنانے کے لیے بہتر کردار ادا کر رہی ہے خواتین کے مسائل زیادہ ہوتے ہیں حکومت ان مسائل کے حل پر فوکس کر رہی ہیں جلد ہی صوبائی کابینہ میں خواتین کو نمائندگی دی جا رہی ہے انہوں نے کہا کہ خواتین کو سب سے زیادہ حقوق اسلام نے دیے ہیں خواتین کو محفوظ اور انتظامی طور پر مظبوط بنانے کے لیے بہترین قانون سازی ہو رہی ہے صوبائی حکومت خواتین کو تعلیم یافتہ بنانے کے لیے زیادہ سکول اور کالج بنا رہی ہے کیونکہ تعلیم یافتہ خواتین مسائل کے حل اورملکی ترقی میں نمایاں کردار ادا کرتی ہے۔

مزید : صفحہ اول


loading...