امریکاایران کشیدگی پرپاکستان نےتہران اور سعودی عرب سے کیاکہا؟ وزیرخارجہ نے خود ہی بتادیا

امریکاایران کشیدگی پرپاکستان نےتہران اور سعودی عرب سے کیاکہا؟ وزیرخارجہ نے ...
امریکاایران کشیدگی پرپاکستان نےتہران اور سعودی عرب سے کیاکہا؟ وزیرخارجہ نے خود ہی بتادیا

  



ریاض(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے کہاہے کہ مشرق وسطیٰ میں جاری کشیدگی کے خاتمے کیلئے انہوں نے سعودی ہم منصب فیصل بن فرحان سے ریاض میں ملاقات کی جبکہ اس سے قبل انہوں نے ایران میں صدر حسن روحانی سے ملاقات کی۔

سعودی ہم منصب سے ملاقات میں سعودی عرب کے ساتھ باہمی اور سٹریٹجک تعلقات پر بات چیت کی۔شاہ محمود نے کہا انہوں نے واضح کیا ہے کہ پاکستان خطے میں کشیدگی میں کمی اور امن کیلئے کی جانے والی تمام کوششوں کی حمایت کرے گا اور تمام فریقین میں پائیدار روابط کیلئے سہولت کا ر کاکردار ادا کرے گا۔

تفصیلات کے مطابق اسلامی جمہوریہ ایران کے دو روزہ دورے کے بعد پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی تہران سے ریاض پہنچے اور سعودی وزیر خارجہ فیصل بن فرحان آل سعود سے ملاقات کی اور خطے کی تازہ ترین اور حساس صورتحال کا جائزہ لیا۔دورہ سعودی عرب کے حوالے سے اپنی تازہ ترین ٹویٹ میں شاہ محمود قریشی نے کہا کہ ”میں نے سعودی ہم منصب فیصل بن فرحان سے ریاض میں ملاقات کی۔ ملاقات میں سعودی عرب کے ساتھ باہمی اور سٹریٹجک تعلقات پر بات چیت کی۔اورواضح کیا کہ پاکستان خطے میں کشیدگی میں کمی اور امن کیلئے کی جانے والی تمام کوششوں کی حمایت کرے گا اور تمام فریقین میں پائیدار روابط کیلئے سہولت کا ر کاکردار ادا کرے گا۔“

اس سے قبل جاری ہونے والے بیان میں کہاگیاکہ دونوں ممالک کے وزرائے خارجہ نے خطے کی حالیہ صورتحال کے بارے میں گفتگو جاری رکھنے پر اتفاق کیا ہے۔شاہ محمود قریشی نے کہا امریکہ کے ہاتھوں ایران کی سپاہ قدس کے کمانڈر جنرل قاسم سلیمانی کے انتقال کے سبب مغربی ایشیا میں پیدا ہونے والی کشیدگی کے بعد انہوں نے مختلف ممالک سے رابطہ کیا اور سبھی ممالک اس خطے میں کشیدگی کم کرنے کے خواہاں ہیں۔

شاہ محمود قریشی نے کہا علاقے میں رونما ہونے والے حالیہ واقعات کے سبب خطے کو بڑے سخت چیلنجوں کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے اس لئے سبھی فریق ڈپلومیسی کی راہ پر گامزن ہوں۔انہوں نے اطمینان دلایا کہ پاکستان خطے میں قیام امن و صلح کے لئے کسی کوشش سے دریغ نہیں کرے گا۔

شاہ محمود قریشی ریاض کا دورہ مکمل کرنے کے بعد عمان کے دارالحکومت مسقط چلے گئے۔

واضح رہے کہ شاہ محمود قریشی مشرق وسطیٰ میں جاری کشیدگی کو کم کرنے کیلئے وزیراعظم عمران خان کی ہدایت پر ایران، سعودی عرب اور امریکا کا دورہ کررہے ہیں۔ اپنے دورے کے پہلے مرحلے میں وہ ایرانی دارالحکومت تہران پہنچے تھے جہاں انہوں نے ایرانی صدر حسن روحانی سے ملاقات کی۔

اپنی ملاقات کا احوال ٹویٹر پر بتاتے ہوئے شاہ محمود قریشی نے کہا صدر روحانی سے ملاقات انتہائی پائیدار اور تعمیری ثابت ہوئی۔خطے میں جاری کشیدگی کے خاتمے کے عزم کو دہرایاگیا،شاہ محمود نے کہا ہم اس عزم پر قائم ہیں کہ علاقائی استحکام اور سلامتی کیلئے پرعزم ہیں اور واضح کرتے ہیں کہ پاکستانی سرزمین کسی بھی جنگ کیلئے استعمال نہیں ہوگی۔

مزید : اہم خبریں /قومی /عرب دنیا


loading...