کورٹ کاڈیکورم ہوتا ہے،ٹوپی توہمیں پہننی چاہئے،چیف جسٹس پشاورہائیکورٹ ٹوپی غلط پہننے پروکیل پر برہم

کورٹ کاڈیکورم ہوتا ہے،ٹوپی توہمیں پہننی چاہئے،چیف جسٹس پشاورہائیکورٹ ٹوپی ...
کورٹ کاڈیکورم ہوتا ہے،ٹوپی توہمیں پہننی چاہئے،چیف جسٹس پشاورہائیکورٹ ٹوپی غلط پہننے پروکیل پر برہم

  



پشاور(ڈیلی پاکستان آن لائن)چیف جسٹس پشاورہائیکورٹ پی ٹی سی ایل اکاﺅنٹس بلاک ہونے سے متعلق کیس میں وکیل کی جانب سے ٹوپی غلط پہننے پربرہم ہوگئے۔چیف جسٹس نے وکیل سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ کورٹ کاڈیکورم ہوتا ہے،ٹوپی توہمیں پہننی چاہئے،آفس نے اعتراض بھی لگادیا،مگرآپ نے اعتراض ختم نہیں کیا۔

تفصیلات کے مطابق پشاورہائیکورٹ میں پی ٹی سی ایل اکاؤنٹس بلاک ہونے سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی،سماعت جسٹس وقاراحمدسیٹھ اورجسٹس عبدالشکور نے کی، اسلام آبادسے تعلق رکھنے والے 2 وکلاعدالت پیش ہوئے،چیف جسٹس ہائیکورٹ نے استفسار کیا کہ وکلاتوہڑتال پرہیں،وکیل نے کہا کہ میں اسلام آبادسے آیاہوں ۔چیف جسٹس ہائیکورٹ نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ اسی طرح سیکھیں گے۔

وکیل نے عدالت کے روبروموقف اختیار کیا کہ اکاؤنٹ سے متعلق ارجنٹ مسئلہ ہے،چیف جسٹس ہائیکورٹ نے کہا کہ آپ کامطلب دیگروکلاکے کیسزاہم نہیں،وکیل کی جانب سے ٹوپی غلط پہننے پرچیف جسٹس ہائیکورٹ برہم ہوگئے۔

چیف جسٹس نے وکیل سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ کورٹ کاڈیکورم ہوتا ہے،ٹوپی توہمیں پہننی چاہئے،آفس نے اعتراض بھی لگادیا،مگرآپ نے اعتراض ختم نہیں کیا،چیف جسٹس نے استفسار نے کہا کہ آپ کی وکالت کتنی ہوگئی ہے،چیف جسٹس پشاورہائیکورٹ نے کیس خارج کردیا۔

مزید : قومی /علاقائی /خیبرپختون خواہ /پشاور