آپ کے ہاتھ کی گرفت آپ کی صحت کا حال بتاتی ہے، مگر کیسے؟ جانئے

آپ کے ہاتھ کی گرفت آپ کی صحت کا حال بتاتی ہے، مگر کیسے؟ جانئے
آپ کے ہاتھ کی گرفت آپ کی صحت کا حال بتاتی ہے، مگر کیسے؟ جانئے

  



لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) بعض لوگ نرمی سے ہاتھ ملاتے ہیں جبکہ بعض کافی سخت گرفت کے ساتھ مصافحہ کرتے ہیں۔ اب اس دوسری قسم کے لوگوں کوسائنسدانوں نے خوشخبری سنا دی ہے اور پہلی قسم والوں کے لیے وارننگ جاری کر دی ہے۔ میل آن لائن کے مطابق سائنسدانوں نے نئی تحقیق میں بتایا ہے کہ جن لوگوں کی ہاتھ کی گرفت نرم ہو ان کو سٹروک اور ہارٹ اٹیک جیسے امراض لاحق ہونے کا خطرہ بہت زیادہ ہوتا ہے۔ اس کے علاوہ ان کے بڑھتی عمر میں جا کر رعشہ یا ڈیمنشا میں مبتلا ہونے کے امکانات بھی کافی زیادہ ہوتے ہیں۔

جرنل آف الزیمرز ڈیزیز کے زیرانتظام اس تحقیق میںسائنسدانوں کا کہنا تھا کہ 30سال کے مرد کے ہاتھ کی گرفت اوسطاً40کلوگرام ہوتی ہے۔ کسی مرد کے ہاتھ کی گرفت اس سے جتنی کم ہوتی جائے گی اس کو سٹروک، ہارٹ اٹیک اور رعشہ ہونے کے امکانات اتنے ہی زیادہ ہوتے جائیں گے۔برطانیہ کے سرے فزیو کلینک کے کلینیکل ڈائریکٹر اور فزیوتھراپسٹ ٹم الرڈائس کا کہنا تھا کہ ”ہاتھ کی گرفت ہمارے جسم کے تمام پٹھوں کی مضبوطی کی عکاس ہوتی ہے۔ اگر ہاتھ کی گرفت کمزور ہوتو سمجھ لینا چاہیے کہ ہمارے پورے جسم کے پٹھے کمزور ہیں ۔“

اس سے قبل اسی موضوع پر 17ممالک کے 1لاکھ 40ہزار افراد پر کی جانے والی ایک تحقیق میں بتایا گیا تھا کہ ہاتھ کی گرفت میں ہر پانچ کلوگرام کمی سے انسان میں دل کے امراض اور بلند فشار خون سے مرنے کا خدشہ 17فیصد بڑھ جاتا ہے۔“اس تحقیقاتی ٹیم کے سربراہ ڈاکٹر ڈیرائل لیونگ کا کہنا تھا کہ ”ہاتھ کی گرفت مہلک بیماریوں اور موت کے خطرے کو ناپنے کا آسان اور سستا ترین طریقہ ہو سکتا ہے۔“

مزید : تعلیم و صحت