دنیا کی سب سے خطرناک خاتون پولیس مقابلے میں ہلاک

دنیا کی سب سے خطرناک خاتون پولیس مقابلے میں ہلاک
دنیا کی سب سے خطرناک خاتون پولیس مقابلے میں ہلاک

  



میکسیکو سٹی(مانیٹرنگ ڈیسک) میکسیکو میں ایک خطرناک گینگ کی سرغنہ لڑکی پولیس اور فوج کے ساتھ مقابلے میں ماری گئی۔ اس 21سالہ ماریا گواڈالوپے لوپیز ایسکویل نامی خوبرو لڑکی کو دیکھ کر کوئی یقین ہی نہ کرے کہ وہ ایسے خطرناک گروہ کی سرغنہ تھی اور اب تک پولیس، فوج اور بارڈر فورس سمیت تمام سکیورٹی ایجنسیوں پر خوفناک حملے کروا چکی تھی۔ گزشتہ سال اکتوبر میں اس نے اپنے گینگ کے لوگوں کے ساتھ مل کر پولیس کے 13آفیسرز مار ڈالے تھے۔ یہ جگہ انہوں نے یہ واردات کی تھی، گزشتہ روز اسی جگہ فوج اور پولیس نے مشترکہ کارروائی کی۔ فورسز کے آنے پر ماریا ، جو ’لا کترینا‘ کے نام سے معروف تھی، نے اور اس کے ساتھیوں نے فوجیوں اور پولیس اہلکاروں پر فائرنگ کر دی، کافی دیر تک مقابلے کے بعد ماریا اور اس کے 6مرد ساتھیوں کو گرفتار کر لیا گیا۔

مرد ساتھی اس مقابلے میں محفوظ رہے تاہم ماریہ شدید زخمی ہو گئی اور بعد ازاں دم توڑ گئی۔ منظرعام پر آنے والی فوٹیج میں دیکھا جا سکتا ہے کہ ماریا خون میں لت پت آخری ہچکیاں لے رہی ہوتی ہے۔ اگلے منظر میں ان تمام لوگوں کو ایک ہیلی کاپٹر میں ڈالا جا رہا ہوتا ہے اور ماریا کو اس کے گینگ کے ایک رکن نے ہاتھوں میں اٹھا رکھا ہوتا ہے۔ رپورٹ کے مطابق میکسیکو کی ریاست میشواکین کا شہر ’لا بوکینڈا‘ ماریہ کے گینگ کا گڑھ تھا جہاں لوگ اس کے نام سے کانپ اٹھتے تھے۔ میکسیکو حکام کی طرف سے تاحال سرکاری سطح پر ماریا کے ہلاک ہونے کی تصدیق نہیں کی گئی تاہم مقابلے کی منظرعام پر آنے والی ویڈیو میں موجود لڑکی کے بازو پر بنے ٹیٹو سے تصدیق ہوتی ہے کہ وہ ماریا ہی تھی۔ جس وقت پولیس نے ان پر دھاوا بولا، ماریا اور گینگ ’نیو جنریشن کارٹل‘ کے سرغنہ میگوئیل فرنینڈز سے ملاقات کر رہی تھی۔ یہ معلوم نہیں ہو سکا کہ میگوئیل اور اس کے ساتھ کس طرح وہاں سے فرار ہونے میں کامیاب ہو گئے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس