’میں نے 16 سال کی عمر میں سکول چھوڑ دیا اور اب 40 لاکھ روپے ماہانہ کماتا ہوں‘

’میں نے 16 سال کی عمر میں سکول چھوڑ دیا اور اب 40 لاکھ روپے ماہانہ کماتا ہوں‘
’میں نے 16 سال کی عمر میں سکول چھوڑ دیا اور اب 40 لاکھ روپے ماہانہ کماتا ہوں‘

  



لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) برطانیہ میں ایک نوجوان نے ایک سال قبل 16سال کی عمر میں سکول چھوڑ دیا اور ایسا کام شروع کر دیا کہ اب اس کی آمدنی کے متعلق جان کر آپ سنگ رہ جائیں گے۔ دی مرر کے مطابق لندن کے رہائشی اس 17سالہ نوجوان کا نام جوئی فرینکلن ہے جس نے ایک سال قبل کرسمس پر مہنگے جوگرز خریدنے کے لیے رقم جمع کی۔ اسے لگژری جوگرز کا بہت شوق تھا۔ وہ یہ جوگرز خرید کر اپنے دوستوں کو متاثر کرنا چاہتا تھا مگر جوگرز کے اس جوڑے نے اس کی زندگی بدل دی۔

رپورٹ کے مطابق اس نے کئی ماہ رقم جمع کرنے کے بعد جوگرز کا ایک جوڑا خریدا اور اگلے ہی دن اسے ایک شخص نے دگنا قیمت پر وہ جوگرز فروخت کرنے کی پیشکش کر دی۔ جوئی نے یہ جوڑا اسے بیچ دیا اور نیا جوڑا تلاش کرنے نکل کھڑا ہوا۔ وہ نئے لگژری جوگرز خریدتا گیا اور وہ آگے فروخت ہوتے گئے۔ اسے اس کاروبار کا ایسا چسکا پڑا کہ اس نے سکول بھی چھوڑ دیا اور یہی کام شروع کر دیا۔ اب ایک سال بعد وہ ایک ہفتے میں 5ہزار پاﺅنڈ (تقریباً 10لاکھ روپے) سے 20ہزار پاﺅنڈ (تقریباً 40لاکھ روپے) کما رہا ہے۔ اس کے گاہکوں میں معروف گلوکار ڈیزی راسکل سمیت کئی مشہور شخصیات بھی شامل ہو چکی ہیں۔ جوئی خصوصی کولیکشن سے جوتے خریدتا اور آگے فروخت کرتا ہے اور اس جیسے جوتے کسی اور کے پاس دستیاب نہیں ہوتے۔ بی بی سی سے گفتگو کرتے ہوئے جوئی کا کہنا تھا کہ ”جب میں نے پہلا جوڑا خریدا تو میرے وہم و گمان میں بھی نہیں تھا کہ یہی میرا پیشہ بن جائے گا۔ ابتداءمیں ہی مجھے لوگوں کی طرف سے جوتے خریدنے کے لیے اتنے پیغامات آنے لگے کہ میں حیران رہ گیا اور یہی کام شروع کرنے کا فیصلہ کر لیا۔“ جوئی نے بی بی سی کو بتایا کہ اب تک اس نے جوتوں کا سب سے مہنگا جوڑا 62ہزار پاﺅنڈ(تقریباً 1کروڑ 24لاکھ روپے) میں فروخت کیا۔ اس جوڑے کی فروخت سے اسے 17ہزار پاﺅنڈ کا منافع ہوا تھا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...