پاکستان، ترکی اور آذربائیجان تحفظ اسلامی اقدار کیلئے مشترکہ حکمت عملی اپنانے پر متفق

  پاکستان، ترکی اور آذربائیجان تحفظ اسلامی اقدار کیلئے مشترکہ حکمت عملی ...

  

 اسلام آباد(آئی این پی)پاکستان، ترکی اور آذربائیجان کے وزرائے خارجہ نے مقبوضہ جموں و کشمیر میں جاری انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں اور اسلاموفوبیا کے بڑھتے رجحا ن پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے اسلامی اقدار کے تحفظ کیلئے مشترکہ حکمت عملی اپنانے پر اتفا ق کیا جبکہ وزیر خارجہ شاہ محمود نے کہاہے پاکستان، ترکی اور آزربائیجان کے درمیان یکسا ں ثقافتی، مذہبی و تاریخی اقدار کی بنیاد پر گہر ے برادرانہ تعلقات ہیں،پاکستان کے لوگ، ترکی اور آزربائیجان کے روحانی مراکز سے گہرا لگاؤ رکھتے ہیں۔بدھ کووزارتِ خارجہ میں پا کستا ن، ترکی اور آزربائیجان کے مابین دوسرے سہ ملکی مذاکرات کا آغاز ہوا جس میں وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود،ترک وزیر خارجہ میولوت چاوش اوغلو اور آزربائیجان کے وزیر خارجہ جیہون بیراموف نے اپنے وفود کے ہمراہ شرکت کی۔اس موقع پر وزیر خارجہ شاہ محمود نے کہا دو سر ے سہ ملکی مذاکرات کی میزبانی ہمارے لیے باعث مسرت ہے،ترک اور آز ر بائیجان کے ہم منصبوں کو دوسرے سہ ملکی مذاکرات میں شرکت پر خوش آمدید کہتا ہوں،پاکستان کے لوگ، ترکی اور آزربائیجان کے روحانی مراکز سے گہرا لگاؤ رکھتے ہیں،دوران مذ اکرات، تجارت، سرما یہ کاری اور عوامی سطح پر روابط کے فروغ کیلئے مختلف پہلوؤں پر غور و خوض کیا گیا۔تینوں وزرائے خارجہ نے مقبوضہ جموں و کشمیر میں جاری انسا نی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں اور اسلاموفوبیا کے بڑھتے ہوئے رجحان پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے اسلامی اقدار کے تحفظ کیلئے مشتر کہ حکمت عملی اپنانے پر اتفاق کیا،ان مذاکرات میں افغان امن عمل کے حوالے سے بھی تبادلہ خیال کیا گیا،بین الافغان مذاکرات کے انعقا د کو سراہتے ہوئے پاکستان کے مصالحانہ کردار کی تعریف کی گئی۔کورونا وبا کے معاشی مضمرات سے نمٹنے کیلئے تینوں ممالک کا مشترکہ لائحہ عمل اختیار کرنے اور مل کر اس وبائی چیلنج سے نمٹنے کا عزم کیا گیا۔پاکستان، ترکی اور آزربائیجان کے درمیان تجارت، معیشت، تعلیم، صنعت،توا نا ئی اور ثقافت کے شعبہ جات میں تعاون کے فروغ کے حوالے سے تفصیلی مشاورت ہوئی۔تینوں فریقین نے دہشت گردی بشمول ریاستی د ہشتگردی کی مذمت کرتے ہوئے، اس عفریت سے نمٹنے کیلئے مشترکہ حکمت عملی اپنانے پر غورکیا۔

متفق

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے ترک وزیر خارجہ میولود چاوش اولو کو پاک ترک تعلقات کے استحکام کے اعتراف میں دوسرا اعلیٰ ترین سول ایوارڈ ہلال پاکستان عطا کیا۔ایوارڈ دینے کی تقریب ایوان صدر میں ہوئی جس میں ترک وزیر خارجہ کے ہمراہ آنے والے وفد کے علاوہ وفاقی وزرا اور سول حکام نے شرکت کی۔ تقریب سے قبل ترک وزیر خارجہ نے صدر مملکت سے ملاقات کی اور باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیااس موقع پرپاکستان اور ترکی کے درمیان تجارت وثقافت کے شعبوں میں دو طرفہ تعاون کو مزید فروغ دینے پر اتفاق کیا گیا۔صدر عارف علوی نے مقبوضہ جموں وکشمیر پر پاکستان کی اصولی حمایت اور اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں ترک صدر کی حالیہ تقریر میں کشمیریوں کے حق میں آواز بلند کرنے پر شکریہ ادا کیا۔ترک وزیر خارجہ نے کہا کہ ترکی پاکستان کے ساتھ تجارتی تعلقات کو بہتر بنانے کا خواہاں ہے، ترکی ترک کمپنیوں کی پاکستان میں سرمایہ کاری کے لئے حوصلہ افزائی کرتارہے گا۔ ترکی تمام بین الاقوامی فورمز پر پاکستان کی حمایت جاری رکھے گا۔ نگورنو کاراباخ پر آذربائیجان کی حمایت پر ترکی پاکستان کے تعاون کو سراہتا ہے۔علاوہ ازیں ترک وزیر خارجہ نے وزیراعظم عمران خان سے بھی ملاقات کی جس میں دوطرفہ تعلقات کے فروغ، علاقائی اور بین الاقوامی امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔اعلامیہ کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے پاک ترک سیاسی تعلقات کو مضبوط معاشی شراکت داری میں بدلنے کی اہمیت پر زور دیا۔ انہوں نے امن وسلامتی کو بھارتی اقدامات سے درپیش خطرات پر بھی روشنی ڈالی۔ وزیراعظم نے افغانستان میں جاری تنازع کے پرامن حل کے لیے پاکستان کے مثبت کردار پر بات کی۔دریں اثناء پاک ترک وزرائے خارجہ مذاکرات میں اقتصادی و تجارتی تعلقات مضبوط بنانے کے عزم کا اظہار کیا گیا، تعلیمی شعبہ میں دوطرفہ تعاون کے فروغ کے حوالے سے مفاہمتی یادداشت پر دستخط بھی کئے گئے۔ دفترخارجہ میں منعقد مذاکرات میں دو طرفہ تعلقات، پاکستان اور ترکی کے مابین مختلف شعبہ جات میں کثیر الجہتی اسٹریٹیجک شراکت داری کے مختلف پہلوؤں پر تبادلہ خیال کیا گیا۔اس موقع پر وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ دونوں ممالک کے شاندار تعلقات کو اسٹریٹیجک شراکت داری میں تبدیل کرناہوگا، پاکستان نے ترک کاروباری حضرات کیلئے ای ویزہ کا اجراء کیا ہے، عالمی فورموں پر حمایت کے لئے ترکی کے شکرگزار ہیں، عالمی برادری بھارت پر زور دے کہ وہ اقوام متحدہ کے غیر جانبدار مبصرین کو مقبوضہ کشمیر تک رسائی دے تاکہ دنیا اصل حقائق جان سکے۔ترک وزیر خارجہ نے دونوں ممالک کے مابین دو طرفہ تجارتی، اقتصادی تعاون کے فروغ کیلئے مشترکہ کوششیں جاری رکھنے پرزور دیا۔ پاکستان اور ترکی کے مابین تعلیمی شعبے میں دو طرفہ تعاون کے فروغ کے حوالے سے مفاہمتی یادداشت پر وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود اور ترک وزیر خارجہ میولوت چاوش اوغلو نے دستخط کئے، ترک وزیرخارجہ نے دفترخارجہ کے سبزہ زار میں پودا بھی لگایا۔

ہلال پاکستان

مزید :

صفحہ اول -